’یاہو‘ کو نئے نام’الٹابا‘سے چلانے کا فیصلہ

امریکی انٹرنیٹ کمپنی ’یاہو‘کی ڈاریکٹر مریسا مئیر نے یاہو کو حالیہ ہیکر کی جانب سے حملے کے بعد بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے بعد اسے خریدنے والی نئی فرم اس کمپنی کو ’یاہو‘کی بجائے ’الٹابا‘کے نام سے چلائے گی۔

مریسا مئیر نے یہ انکشاف گزشتہ دنوں ہونے والے ٹیکنالوجی کے سب سے بڑے میلے سی ای ایس میں کیا جس میں ان کا کہنا تھا کہ ہم 55ملین ڈالر کے پیکیج کے ساتھ یاہو سے الگ ہوجائیں گے اور اس کمپنی کے بورڈ آف ڈاریکٹر کے پانچوں ممبر بھی استعفیٰ دے دیں گے ،جس کے بعد نئے ممبرز اس فرم کو ایک نئے نام الٹابا کے نام سے چلائیں گے۔

واضح رہے امریکا کی معروف ٹیلی کام کمپنی ’ویریزون‘ امریکی انٹر نیٹ کمپنی ’یاہو‘کو تقریبا پانچ ارب ڈالر نقد رقم میں خرید رہی ہے جس کے بعد ’یاہو‘ کی اصل انتظامیہ کے پاس صرف یاہو جاپان کے 35اعشاریہ 5 فیصد جبکہ چینی ای کامرس کمپنی ’علی بابا گروپ ہولڈنگ لمیٹڈ‘ کے 15 فیصد شیئرز رہ جائینگے۔