مقبوضہ کشمیر ایک الگ وطن ہے ،بھارت نے اعتراف کر لیا

پٹنہ: بھارتی محکمہ تعلیم نے بھی مقبوضہ کشمیر کو بھارت کا اٹوٹ انگ تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے علیحدہ ملک قرار دے دیا۔بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست بہار کے محکمہ تعلیم نے امتحانات میں مقبوضہ کشمیر کو علیحدہ ملک قرار دیا ہے۔ سرکاری تعلیمی بورڈ کی جانب سے ساتویں جماعت کے امتحان میں سوال پوچھا گیا کہ چین، نیپال، انگلینڈ، کشمیر اور بھارت ان پانچ ممالک کے لوگ کیا کہلاتے ہیں۔بہار کے اسکولوں کے امتحانات 5 اکتوبر سے شروع ہوئے اور ہفتے بھر تک جاری رہنے کے بعد آج ختم ہوئے۔ بعدازاں ایک طالب علم نے اس کی نشاندہی کی تو بھارتی تعلیمی بورڈ نے اسے اپنی غلطی قرار دے کر معذرت کرلی۔ جبکہ درحقیقت تعلیمی بورڈ نے غلطی نہیں کی بلکہ سچائی کا اعتراف کرلیا۔کشمیربھارت کاحصہ نہیں بلکہ ایک الگ ملک ہے ۔یہ خالصہ بہاراسٹیٹ بورڈنے ساتویں جماعت کے طلاب کیلئے مرتب کردہ ایک سوالنامے میں کیاہے ۔ ریاست میں مقامی بورڈآف اسکول ایجوکیشن کے زیراہتمام مختلف جماعتوں کے امتحانات5 اکتوبر سے لئے جارہے ہیں ۔ جن میں ساتویں جماعت کے طالب علم بھی شامل ہیں ۔

 روزنامہ ٹائمزآف انڈیانے ایک نیوزرپورٹ میں یہ انکشاف کیاہے کہ ساتویں جماعت کے طلبا سے ایک سوالنامے میں یہ پوچھاگیاکہ چین ،نیپال ،انگلینڈ، کشمیراورانڈیا کے لوگوں کوکیاکہاجاتاہے۔ مطلب انڈیاکے لوگوں کوانڈین یاہندوستانی ،چین کے لوگوں کوچینی اوراسی طرح سے کشمیرکے لوگوں کوکشمیری کہاجاتاہے ۔نیوزرپورٹ کیساتھ بطورثبوت ایک سوالنامے کی کاپی بھی رکھی گئی ہے ۔جس میں متذکرہ بالاسوال صاف طورپرضبط تحریرمیں لایاگیاہے۔بتایاجاتاہے کہ سوالنامے میں پوچھے گئے متنازعہ سوال کامعاملہ ساتویں جماعت کے کچھ طلبا نے اساتذہ یاامتحانی عملہ کی نوٹس میں لایا۔