احتساب عدالت نے نواز شریف کو بیٹوں سمیت 19 ستمبر کو طلب کر لیا

اسلام آباد: نیب نے پاناما کیس میں سپریم کورٹ کے 28 جولائی کے فیصلے کی روشنی میں شریف خاندان اور اسحاق ڈار کے خلاف ریفرنس دائر کیے ہیں جن میں شریف خاندان کے خلاف تین اور اسحاق ڈار کے خلاف ایک ریفرنس ہے۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے نیب ریفرنس پر سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کے صاحبزادوں حسن اور حسین نواز کو 19 ستمبر کو طلب کر لیا ہے۔ احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نیب کی جانب سے دائر فلیگ شپ ریفرنس پر مختصر سماعت کے بعد ملزمان کو نوٹس جاری کر دیئے ہیں جن میں انہیں ذاتی طور پر پیش ہونے کا حکم دیا گیا ہے۔

اس سے قبل آج نیب نے فلیگ شپ ریفرنس پر احتساب عدالت کی جانب سے لگائے گئے اعتراضات دور کر کے ریفرنس کو اضافی دستاویزات کے ساتھ اسلام آباد کی احتساب عدالت کے رجسٹرار آفس میں جمع کرایا تھا۔

رجسٹرار آفس نے شریف خاندن اور اسحاق ڈار کے خلاف چاروں ریفرنس اعتراض لگا کر واپس بھیجے تھے جن میں سے نیب نے اب بھی تین ریفرنس پر اعتراض دور کر کے انہیں عدالت میں جمع کرانا ہے۔ ان تین ریفرنسز میں سے ایک ریفرنس اسحاق ڈار کے خلاف جب کہ 2 شریف خاندان کے ہیں۔

نیب کی جانب سے شریف خاندان کے خلاف العزیزیہ ملز اور لندن فلیٹس  جب کہ اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں پر ریفرنس مکمل کر کے جمع کرایا جائے گا۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں