سرحد پار سے حملے میں پاک آرمی کے دو جوانوں کی شہادت ، افغان ناظم الامور کی دفتر خارجہ طلبی، سخت احتجاج

اسلام آباد: پاکستان نے سرحد پار افغان سرزمین سے حملے میں پاک آرمی کے دو جوانوں کی شہادت کی سخت مذمت کرتے ہوئے افغانستان سے احتجاج کیا۔

دفتر خارجہ سے جاری بیان کے مطابق پیر کے روز افغان سرزمین سے باجوڑ میں پاکستانی چیک پوسٹ پر دہشت گرد حملے کے نتیجے میں پاک آرمی کے دو جوانوں کی شہادت پر افغان ناظم الامور کو طلب کرکے شدید احتجاج کیا گیا۔بیان میں کہا گیا کہ پاک ۔ افغان سرحد کے پاکستانی علاقے میں حالیہ کچھ عرصے میں سرحد پار سے ہونے والے دہشت گرد حملوں میں تیزی دیکھنے میں آرہی ہے۔ افغان سرحدی علاقے سے پاکستانی چیک پوسٹوں پر حملے اس بات کا ثبوت ہیں کہ افغان سرحدی علاقوں میں بڑی تعداد میں دہشت گرد موجود ہیں جہاں افغان حکومت کی کوئی رٹ نہیں ہے۔

دفتر خارجہ نے کہا کہ افغان فورسز کی جانب سے پاکستان کے خلاف ان دہشت گرد حملوں کی حمایت کیے جانا افغانستان اور خطے کے امن کے لیے شدید خطرہ ہے۔پاکستان کی جانب سے افغان حکومت سے پاکستانی علاقوں میں حملے کرنے والے دہشت گردوں کے خلاف کارروائی اور ان کے ٹھکانے تباہ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے حملوں سے بچنے کے لیے بارڈر مینجمنٹ کو بہتر کرنا ضروری ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز فاٹا کی باجوڑ ایجنسی میں پاک افغان سرحد کے قریب قائم چیک پوسٹ پر سرحد پار سے دہشت گروں کے حملے میں 2 جوان شہید جبکہ 4 زخمی ہوگئے تھے۔

مصنف کے بارے میں