جے آئی ٹی رپورٹ وزیراعظم کے خلاف سازش، جمہوری نظام کے لیے خطرناک ہے،نواب ثناء اللہ زہری

کوئٹہ: وزیر اعلٰی بلوچستان نواب ثناء اللہ زہری نے کہا ہے کہ جے آئی ٹی رپورٹ وزیراعظم کے خلاف سازش ہے جو جمہوری نظام کے لیے خطرناک ہے, بلوچستان کے عوام اور حکومت کا محمد نواز شریف کی قیادت پر بھرپور اعتماد ہے کسی فرد واحد کو منتخب وزیر اعظم کو ہٹانے کا کوئی حق نہیں, اچھے بُرے کا فیصلہ عوام پر چھوڑ دیا جائے 2018میں فیصلہ آجائے گا.

کوئٹہ میں پارلیمانی رہنمائوں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ بعض عناصر ٹکرائو   کی سیاست چاہتے ہیں یہ صورتحال انتہائی تشویشناک ہے, اداروں میں ٹکرائو کے ہم سخت خلاف ہیں, جے آئی ٹی رپورٹ منتخب وزیر اعظم کے خلاف سازش ہے, منتخب جمہوری حکومت کو غیر مستحکم کرناملکی مفاد میں نہیں ہو گا, ہم اداروں میں ٹکرائو   کی سازش کو   ناکام بنا دیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی کی نامکمل رپورٹ پر شور شرابا سمجھ سے بالاتر ہے جس سے ثابت ہوتاہے کہ بعض عناصر ٹکرائو   کی سیاست چاہتے ہیں, وزیر اعظم نے  جے آئی ٹی کے حوالے سے سپریم کورٹ میں اعتراضات بھی جمع کرائے گئے ہیں جو انتہائی موثر ہیں، وزیر اعظم اور ان کا خاندان آئین و قانون کی پاسداری پر یقین رکھتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سیاسی و جمہوری نظام بچانے کے لیے تمام سیاسی قیادت نے بصیرت کا مظاہرہ کیا، وزیر اعظم محمد نواز شریف نے جب ایٹمی دھماکے کیے تب بھی ان کی حکومت کو سازش کے ذریعے ہٹایا گیا اب جبکہ وہ اقتصادی دھماکہ کرنا چاہ رہے ہیں تو ایک مرتبہ پھر ان کے خلاف سازشیں شروع کر دی گئی ہیں، اگر آج غیر جمہوری طریقے سے کسی بھی منتخب وزیر اعظم یا حکومت کو ہٹایا جاتا ہے تو یہ عمل ملک کے سیاسی مستقبل کے لیے انتہائی نقصان دہ ثابت ہو گا اور ایسی کوئی کوشش ملک کے عوام کے مینڈیٹ کی توہین کے مترادف ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ آج ہم ایک ایسے دوراہے پر کھڑے ہیں جہاں منتخب جمہوری حکومت کو غیر مستحکم کرنا ملکی مفاد میں نہیں ہو گا۔ بلوچستان میں امن و استحکام اور تعمیر و ترقی کا جو سفر شروع ہوا ہے وہ وزیر اعظم محمد نواز شریف اور منتخب صوبائی حکومت کی کوششوں کا مرہون منت ہے۔

مصنف کے بارے میں