وزیراعظم کی ہمشیرہ علیمہ خان کا اپنے اوپر لگے تمام الزامات کا سپریم کورٹ میں جواب دینے کا اعلان

وزیراعظم کی ہمشیرہ علیمہ خان کا اپنے اوپر لگے تمام الزامات کا سپریم کورٹ میں جواب دینے کا اعلان
تصویر بشکریہ یوٹیوب سکرین شاٹ

ٹوکیو :وزیراعظم عمران خان کی بہن علیمہ خان نے اپنے اوپر لگے تمام الزامات کا سپریم کورٹ میں جواب دینے کا اعلان کردیا ہے۔


تفصیلات کے مطابق ٹوکیو میں فنڈ ریزنگ تقریب سے خطاب کے دوران علیمہ خان نے کہا کہ والد نے ہمیشہ ایمانداری کا درس دیا، رشوت لینا تو دورکبھی دی بھی نہیں، زندگی میں کبھی غلط طریقے سے پیسہ کمانے کی کوشش نہیں کی۔

عمران خان نے ہمیشہ پیسہ جمع کرنے کی مخالفت کی ہے۔صرف ضرورت کے لیے پیسہ کمانے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ آج کل بریکنگ نیوزمیں ہوں اس لیے سخت سوالات ہو رہے ہیں۔ الزامات سے تکلیف کا احساس ہوتا ہے۔ والد پر الزامات بھی لگائے گئے جو باعث تکلیف ہیں۔

اس سے قبل گزشتہ روز سپریم کورٹ میں پاکستانیوں کے بیرون ملک اثاثوں سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ سپریم کورٹ کے استفسار پر چیئرمین ایف بی آر نے عدالت کو بتایا کہ ایف بی آر نے کمیٹی بناکر 20 لوگوں کا جائزہ لیا ہے، چار لوگوں نے دبئی میں جائیداد تسلیم کی ہے، دو لوگ عدالتی حکم کے بعد ایف بی آر میں پیش نہیں ہوئے، 14 لوگوں نے جواب دیا لیکن ان کے جواب میں تضاد ہے۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے استفسار کیا کہ وقار احمد کی 14 جائیدادیں دبئی میں ہیں لیکن انہوں ٹیکس 6 لاکھ روپے دیا، ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھانے سے قبل جائیداد کوتسلیم کرنا پڑتا ہے، کیا علیمہ خان کی دبئی میں جائیداد ہی ، جس پر چیئرمین ایف بی آر نے کہا کہ علیمہ خان کی دبئی میں 6 پراپرٹیز ہیں۔ ایمنسٹی اسکیم کے تحت فائدہ لینے والوں کے نام صیغہ راز میں رکھے جاتے ہیں۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ جن جائیدادوں کی تفصیل مانگی وہ نہیں ملی، کس چیز کا صیغہ راز کیا یہ آپ کی جائیداد ہے، کیا علیمہ خان نے ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھایا ، عدالت کے پاس تفصیلات طلب کرنے کا اختیار ہے، عدالت کو فوری معلومات فراہم کریں، ہمیں معلومات سربمہر لفافے میں ڈال کر دے دیں۔

عدالت نے ایف بی آر سے علیمہ خان کی دبئی میں جائیدادوں اور ایمنسٹی سکیم سے فائدہ کی تفصیلات طلب کر لیں جب کہ وقار احمد کو آج عدالت پیش ہونے کا حکم دے دیا۔