مائیکل جیکسن کی بیٹی نے اپنے ساتھ زیادتی کا انکشاف کر دیا

مائیکل جیکسن کی بیٹی نے اپنے ساتھ زیادتی کا انکشاف کر دیا

نیو یارک: مائیکل جیکسن کی بیٹی پیرس جیکسن نے بے حد جرات سے اعتراف کر لیا ہے کہ اس کی چودہ سال کی عمر میں نامعلوم شخص نے عصمت دری کی تھی۔ اٹھارہ سالہ پیرس جیکسن نے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ مائیکل جیکسن کی موت نے زندگی اور صحت پر گہرے نفسیاتی اثرات مرتب کئے۔ وہ کئی سال تک پریشانی اور اعصابی تنائو میں مبتلا رہی ہیں۔


عصمت دری کے متعلق سوال پر پیرس جیکسن نے کہا کہ میں اس افسوسناک واقعہ کے متعلق بات نہیں کرنا چاہتی مگر یہ واقعہ میری زندگی اور میری ذات کے لیے بہت ہی المناک تھا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے عصمت ریزی کے واقعے کے وقت یہ فیصلہ کیا تھا کہ وہ اس واقعے کے بارے میں کبھی کسی سے بات نہیں کرے گی۔

اس واقعے نے اسے نفسیاتی الجھاو  اور پریشانیوں کا شکار کردیا تھا۔ وہ والد کی وفات سے قبل گھر چھوڑ کر جانے پر غور کر رہی تھی۔ انہوں نے کہا کہ وہ دوستوں کے ساتھ بات چیت کی صلاحیت بھی کھو بیٹھی تھی اور بڑوں کی پیروی کررہی تھی۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ انٹرنیٹ کے ذریعے بھی اس جنسی طور پر ہراساں کرنے کی کوشش کی گئی۔ والد کی وفات اور عصمت ریزی کے واقعے کے بعد نفسیاتی دباو اس حد تک بڑھا کہ میں نے کئی بار خودکشی کا فیصلہ اور 2013 میں باقاعدہ کوشش بھی کی۔

انہوں نے کہا کہ نفسیاتی معالجین مدد نہ کرتے تو اس کے لیے تنہا اس مشکل سے نکلنا ممکن نہ تھا۔

نیوویب ڈیسک< News Source