پاک چین اقتصادی راہداری کی اہمیت کو بھارتی میڈیا نے تسلیم کر لیا

نئی دہلی: پاک چین اقتصادی راہداری کی عالمی اہمیت کو بھارتی میڈیا نے بھی تسلیم کر لیااور اس منصوبے کو موجودہ صدی کا زبردست گیم چینجر منصوبہ قراردے دیا، اگر رابطہ سازی،نئی جیو ااسڑٹیجک حالات کی بنیاد ہے تو راہداری منصوبہ کوموجودہ صدی کا سب سے زبردست منصوبہ قراردیا جا سکتا ہے۔
بھارتی اخبار ہندوستان ٹائمز نے ہفتے کواپنے ایک اداریہ میں بالاخر سی پیک کی اہمیت کو تسلیم کر لیا ، منصوبے کے بارے میں کہا گیا ہے کہ اس کے خدوخال سے واضح ہے کہ یہ کثیر الجہتی شاہراہوں ، پائپ لائنز اور تجارتی قافلوں سے حوالے سے ہے ،چینی صدر شی چن پنگ کی جانب سے متعارف کرائے جائے جانے والے ون بیلٹ ون روڈ کے تحت سی پیک انفراانسٹرکچر کا ایک ایسا بین البراعظمی منصوبہ ہے جو کہ موثر طریقے سے پاکستان کو یوریشیا کا لاجسٹکس مرکزبنائے گاجس سے یہ عالمی معیشت کا محور ثابت ہوگا۔
سی پیک متعدد سطح پرکام کررہا ہے،علامتی طور پر یہ ایک ایسی زبردست گواہی ہے جو ثابت کرے گا کہ چین کے ساتھ اتحاد کے معاشی فوائد کیا ہوسکتے ہیں، عمومی طور پر اس کا موازنہ مارشل فنڈ کے ساتھ کیاجا سکتا ہے جوکہ امریکا کی جانب سے دوسری جنگ عظیم کے بعد جنگ کی تباہ کاریوں سے متاثرہ یورپ کی بحالی کے لیے مختص کیا گیا تھا۔
واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے بھارتی اخبار دی ہندو نے بھی سی پیک کی اہمیت کو تسلیم کرتے ہوئے مودی سرکارکومشورہ دیا تھا کہ 64ممالک میں رابطہ سازی قائم کرنے والے اس عظیم منصوبے کی مخالفت ختم کی جائے اور فوری طور پر سی پیک کا حصہ بنیں۔