آرمی ایکٹ میں ترمیم: اپوزیشن سے مشاورت کے لئے مذاکراتی کمیٹی تشکیل

 آرمی ایکٹ میں ترمیم: اپوزیشن سے مشاورت کے لئے مذاکراتی کمیٹی تشکیل
Image Source: File Photo

اسلام آباد:وفاقی حکومت نے اپوزیشن سے آرمی ایکٹ میں ترمیم پر مشاورت کے لئے مذاکراتی کمیٹی قائم کر دی ہے۔


تفصیلات کے مطابق،  کمیٹی میں پرویز خٹک، علی محمد خان، اعظم سواتی اور عامر ڈوگر شامل ہیں۔ حکومتی کمیٹی جمعرات کو اپوزیشن سے آرمی ایکٹ توسیع بل پر مشاورت کرے گی۔

وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا  کہ پارلیمنٹ میں آرمی چیف کی مدت ملازمت کا معاملہ اٹھایاجائےگا۔ اپوزیشن کیساتھ مدت ملازمت میں توسیع اور الیکشن کمیشن معاملے پر اتفاق رائے ہو سکتا ہے۔

خیال رہے کہ وفاقی کابینہ نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے لیے ترمیمی بل کا مسودہ منظور کر لیا ہے۔ اس کے علاوہ حکومت نے نیب ترمیمی آرڈیننس میں اپوزیشن کی ترامیم کو شامل اور مشاورت کرنے کا بھی عندیہ دے دیا ہے۔ پرویز خٹک کی سربراہی میں حکومتی کمیٹی اپوزیشن سے مذاکرات کرے گی۔

شیریں مزاری اور فواد چودھری کی جانب سے بل کے بعض نکات پر تحفظات کا اظہار کیا گیا۔ بل کا مسودہ منظوری کے لئے قومی اسمبلی اور سینیٹ میں پیش کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق کابینہ اجلاس میں نیب ترمیمی آرڈینینس کا بھی جائزہ لیا گیا۔ اتحادی جماعتوں کے تحفظات پر وزیراعظم نے کہا کہ نیب ترمیمی بل میں اپوزیشن کی تجاویز پر بھی غور کیا جائے گا۔

 

واضح رہے کہ اپوزیشن کی جانب سے سابق وزیر قانون فاروق ایچ نائیک نے نیب قوانین میں ترامیم تجویز کی ہیں۔ تجاویز میں کہا گیا ہے کہ چیئرمین نیب کے اختیارات کم کر کے ادارے کو مضبوط بنایا جائے۔