پہلی حکومت ہے جو اپوزیشن کی جگہ خود پارلیمینٹ میں احتجاج کرتی ہے: احسن اقبال

پہلی حکومت ہے جو اپوزیشن کی جگہ خود پارلیمینٹ میں احتجاج کرتی ہے: احسن اقبال
سورس: فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

لاہور: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وفاقی وزیر احسن اقبال نے کہا ہے کہ اپوزیشن ہی ہمیشہ دنیا میں پارلیمینٹ میں احتجاج کرتی ہے لیکن موجودہ حکومت پہلی ہے جو خود ایوان میں احتجاج کرتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ حکومت کے روئیے سے ایوان کا ماحول خراب ہو جاتا ہے، حکومتی وزراءایوان کو اپنی کارکردگی بتانے کے بجائے اپوزیشن پر کیچڑ اچھالتے ہیں، حکومت اگر ایوان کی پاسداری کرے تو کوئی وجہ نہیں کہ ایوان کا ماحول خراب ہو۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ اب بھی حکومت نے انتخابی اصلاحات سے متعلق مشاورت کے بجائے یکطرفہ آرڈیننس جاری کیا، حکومت نے ایوان کو بلڈوز کرتے ہوئے ایسے قوانین پاس کرائے جو آئین کے خلاف تھے، سپیکر نے قوانین کا جائزہ لینے کیلئے کمیٹی بنائی، اگلے ہی دن حکومت کے مشیر بابر اعوان نے کہہ دیا کہ کسی چیز پر نظرثانی نہیں ہو سکتی۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماءنے کہا کہ حکومت ایک دن کچھ کہتی ہے، اگلے دن اس سے مکر جاتی ہے، ہماری تجویز ہے کہ الیکشن کمیشن آزاد منصفانہ الیکشن کرائے، الیکشن کمیشن تمام جماعتوں کو دعوت دے اور ڈائیلاگ کے بعد قومی اتفاق رائے کیا جائے، پچھلے ضمنی انتخابات میں حکومت مسلسل ہاری ہے۔

احسن اقبال کا مزید کہنا تھا کہ 2018ءمیں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) جہاں سے الیکشن جیتی وہاں سے بھی اب ہار چکی ہے، 70 سال میں گرمیوں میں کبھی گیس کی لوڈ شیڈنگ کی مثال نہیں ملتی، موجودہ حکومت جتنی نا اہل ثابت ہوئی اس سطح کی نا اہلی کبھی دیکھی نہیں گئی۔