شاہ سلمان کی پیشانی پر مذہبی رہنما الشیخ حسین نے عقیدت سے بوسہ دیا

شاہ سلمان کی پیشانی پر مذہبی رہنما الشیخ حسین نے عقیدت سے بوسہ دیا

ریاض :سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے دورہ ملائیشیا کے دوران گذشتہ روز ان کی وزیراعظم نجیب عبدالرزاق کے ہمراہ ایک سیلفی نے سوشل میڈیا پر دھوم مچا دی تھی۔اس کے ساتھ ساتھ ایسی ہی ایک اور تصویر کو بھی غیر معمولی عوامی پذیرائی حاصل ہوئی۔تصویر میں ملائیشیا کے ایک ممتاز مذہبی مبلغ اور عالم دین کو کوالالمپور آمد پر استقبال کے دوران ان کی پیشانی پر بوسہ دیتے دیکھا جاسکتا ہے۔شاہ سلمان کی پیشانی پر عقیدت سے بوسہ دینے والے مذہبی رہنما چینی نژاد الشیخ حسین یی ہیں۔


انہوں نے راہ ہدایت تک پہنچنے کے لیے کئی مذاہب تبدیل کیے۔ پہلے انہوں نے بدھ مذہب اختیار کیا۔ اس کے بعد عیسائیت میں گئے اور آخر کار اسلام قبول کر کے راہ ہدایت پر آگئے۔الشیخ حسین یی ملائیشیا کی الخادم آرگنائزیشن کی چیئرمین ہیں۔ یہ تنظیم غیرمسلموں کے سامنے اسلام کی دعوت پیش کرتی ہے۔خود الشیخ حسین یی بھی ایک اسلامی اسکالر ہیں اور انہوں نے اصول دین اور عربی زبان کی تعلیم مدینہ منورہ کی اسلامی یونیورسٹی سے حاصل کی ہے۔

تعلیم سے فراغت کے بعد انہوں نے ملک میں واپس جا کر غیرمسلموں کی رہنمائی کے لیے الخادم تنظیم قائم کی۔ وہ لوگوں کو اسلامی کی دعوت کی طرف بلانے کے لیے اندرون اور بیرون ملک دورے کرتے اور اسلام کی حقیقی تعلیمات کی فہم کے لیے لیکچر دیتے ہیں۔کولالمپور میں سعودی سفارت خانے کے مذہبی اتاشی الشیخ عبدالرحمان الھرفی نے بتایا کہ ملائیشیا کے متعدد علما نے شاہ سلمان سے ان کے دورے کے دوران ملاقات کی۔ ملاقات کرنے والوں میں الشیخ حسین یی بھی شامل تھے۔