وزیر خارجہ کا او آئی سی اجلاس میں شرکت سے انکار، زرداری کی مخالفت

وزیر خارجہ کا او آئی سی اجلاس میں شرکت سے انکار، زرداری کی مخالفت
آصف زرداری نے پاکستانی پائلٹ حسن صدیقی کو بھارتی طیارہ گرانے پر خراج تحسین پیش کیا۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: سابق صدر آصف زرداری نے وزیر خارجہ کی او آئی سی اجلاس میں شرکت نہ کرنے کے فیصلے کی مخالفت کر دی۔


قومی اسمبلی کے مشترکہ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے سابق صدر آصف زرداری نے پاکستانی پائلٹ حسن صدیقی کو بھارتی طیارہ گرانے پر خراج تحسین پیش کیا۔ آصف زرداری نے کہا کہ مودی کا ایڈونچر بھارتی الیکشن کے لیے تھا اور وہ بیک فائر کر گیا۔ جنگ صرف افواج نہیں بلکہ قومیں لڑتی ہیں اور بھارت ہمیشہ دھمکیاں دیتا رہتا ہے۔ ہمیں اپنی معیشت اور طاقت کو مزید مضبوط کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے یو اے ای کے ساتھ مذہبی اور تاریخی تعلقات ہیں اور میں نے تجویز بھیجی تھی کہ او آئی سی میں شرکت سے انکار نہ کیا جائے۔ وزیر خارجہ کو او آئی سی اجلاس میں جانا چاہیے تھا۔ وزیر خارجہ او آئی سی اجلاس میں جاتے اور وہاں پاکستان کے دوستوں سے ملاقاتیں کرتے اور یہ ممالک ہمارے دوست ہیں۔ اگر ایوان کی منشاء ہے کہ حکومت نہ جائے تو میں کچھ زیادہ نہیں کہوں گا۔ پاکستان کی حکومت کو دوست ممالک کو انگیج کرنا چاہیے۔

سابق صدر نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے وزرائے خارجہ اجلاس میں شرکت نہ کرنے کے فیصلے کی مخالفت کی۔

پیپلز پارٹی کے صدر کا کہنا تھا کہ اجلاس میں نہ جانا مسئلے کا حل نہیں اور ہمیں دوستوں کو نہیں بھلانا چاہیے۔ وہاں جا کر بات کریں کیونکہ دنیا بدل گئی ہے۔ چاہے وزیر خارجہ بعد میں جائیں لیکن ابھی سیکریٹری خارجہ کو بھیج دیں اور موجودہ صورت حال میں پاکستان کو اپنے دوستوں کو نہیں بھلانا چاہیے۔

آصف زرداری نے مزید کہا کہ موجودہ صورت حال میں روس، چین اور ترکی کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات کو مزید بہتر کرنا چاہیے تاکہ وہ مشکل وقت میں ہمارے ساتھ کھڑے ہوں۔