عمران خان توشہ خانہ کے تحائف بیچنے والے واحد وزیراعظم ہیں: مریم اورنگزیب

عمران خان توشہ خانہ کے تحائف بیچنے والے واحد وزیراعظم ہیں: مریم اورنگزیب

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ عمران خان واحد وزیراعظم ہیں جنہوں نے توشہ خانہ کے تحائف بیچے اور ایک سرکاری گاڑی اپنے ساتھ لے گئے۔ 4 سال تک اقتدار میں رہنے کے بعد کرپشن کی داستانیں سامنے آ رہی ہیں۔ 

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مریم اورنگزیب نے کہا کہ مسجد نبوی ﷺ میں ہنگامہ کرنے والے افراد کی گرفتاری کے ذمہ دار عمران خان ہیں جنہوں نے لوگوں کو تشدد پر اکسایا، آپ نے مسجد نبویﷺ کو سیاست کیلئے استعمال کیا اور آج وہاں لوگوں کے پاسپورٹ منسوخ ہو رہے ہیں۔ 

مریم اورنگزیب نے کہا کہ آپ نے مسجد نبوی ﷺ میں ایک خاتون کو گالیاں پڑوائیں، میں نے وہاں بھی درودشریف پڑھ کر ان کی ہدایت کیلئے دعا کی، آپ نے غریبوں کو سعودی عرب کے قوانین توڑنے پر اکسایا۔ 

ان کا کہنا تھا کہ 4 سال تک اقتدار میں رہنے کے بعد کرپشن کی داستانیں سامنے آ رہی ہیں، کنٹینر پر بھی جھوٹ بولے اور حکومت میں ہوتے ہوئے بھی الزامات لگائے، اپوزیشن رہنماؤں کے خلاف اینٹی نار کوٹکس تک کو استعمال کیا گیا۔

وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ فرح گوگی پنجاب میں عمران خان کی فرنٹ مین تھی، عمران خان واحد وزیراعظم ہیں جنہوں نے توشہ خانہ کے تحائف بیچے اور ایک سرکاری گاڑی اپنے ساتھ لے گئے۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر کو 2,2 بار گرفتار کیا گیا لیکن پھر بھی کچھ نہیں ملا، 4 سال آپ نے چوری، کرپشن کے الزامات لگائے مگر آپ ایک دھیلے کی کرپشن ثابت نہیں کرسکے۔ 

نیب، ایف آئی اے کو استعمال کرتے ہوئے آپ نے جھوٹے کاغذات دئیے لیکن کچھ ثابت نہیں ہوسکا، شہزاد اکبر نے ڈیوڈ روز کو سرکاری دستاویزات دئیے، آپ نے 4 سال نیب اور ایف آئی اے کو استعمال کیا، 4 سال آپ کو کیوں کرپشن نہیں ملی؟ کیونکہ تھی ہی نہیں۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ عمران خان اپوزیشن کے خلاف کوئی ایک ثبوت سامنے نہیں لائے، کوئی ایک کرپشن یا اختیارات سے تجاوز کا الزام سچ ثابت نہیں ہوا، شہزاد اکبر اور فرح گوگی کی کرپشن کے تمام واقعات بنی گالہ سے مل رہے ہیں، بین الاقوامی اداروں تک سے غیر قانونی طور پر سرکاری دستاویزات شیئر کئے گئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ انٹرنیشنل مانیٹرنگ فنڈ (آئی ایم ایف) کے ساتھ سخت شرائط پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی حکومت نے کیں، 27 پاور پلانٹس بند تھے جو صرف ڈھائی ہفتے میں چل پڑے۔ آپ تو مدینہ کی ریاست کے دعویدار تھے لیکن اپنی ذہنیت کا گند اٹھا کر مدینہ لے گئے۔

مصنف کے بارے میں