جنگ عظیم دوئم کے بعد پہلی مرتبہ ومبلڈن اوپن منسوخ کر دیا گیا

جنگ عظیم دوئم کے بعد پہلی مرتبہ ومبلڈن اوپن منسوخ کر دیا گیا

لندن :سال کے سب سے بڑے ٹینس کے مقابلے ومبلڈن اوپن کو بھی کورونا وائرس کے سبب منسوخ کردیا گیا ۔کورونا وائرس کی عالمی وبا کے سبب دنیا بھر کی عالمی سرگرمیاں اور کھیلوں کے مقابلے منسوخ ہونے کا سلسلہ نہ رک سکا اور اب سال کے سب سے بڑے ٹینس کے مقابلے ومبلڈن چمپئن شپ کو بھی منسوخ کردیا گیا ۔


یہ جنگ عظیم دوئم کے بعد پہلا موقع ہے کہ ومبلڈن اوپن کو منسوخ کیا گیا ہے۔ومبلڈن کا آغاز 29 جون سے ہونا تھا اور اولمپکس کی منسوخی کے بعد تاریخ کی تبدیلی کے ساتھ ساتھ خالی سٹیڈیم میں میچز کے انعقاد کا مشورہ دیا گیا تھا لیکن کھلاڑیوں کی جانب سے سٹیڈیم میں کھیلنے سے انکار اور اسپانسرز کے ممکنہ انکار کے پیش نظر ایونٹ کو بالآخر منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

ومبلڈن کی ویب سائٹ پر جاری بیان میں کہا گیا کہ ہم انتہائی افسوس کے ساتھ اس بات کا اعلان کرتے ہیں کہ آل انگلینڈ کلب کے مرکزی بورڈ اور چمپئن شپ کی مینجمنٹ کی کمیٹی نے کورونا وائرس کے سبب عوام کی صحت کو لاحق خطرات کے پیش نظر ومبلڈن چمپئن شپ کو منسوخ کردیا ہے۔بیان میں کہا گیا کہ 134ویں ومبلڈن چمپئن شپ اب آئندہ سال 28 جون سے 11 جولائی تک منعقد ہوگی۔

ومبلڈن انتظامیہ نے اپنے بیان میں کہا کہ ہمارے لیے ومبلڈن کا انعقاد یقینی بنانے والے برطانیہ اور دنیا بھر کے عوام، کھلاڑیوں، مہمانوں، اراکین، عملے، رضاکاروں، شراکت داروں اور مقامی افراد کی صحت اور حفاظت اولین ترجیح ہے۔

انہوں نے کہاکہ کمیٹی آف مینجمنٹ نے فیصلہ کیا کہ چمپئن شپ کو منسوخ کرنا ہی عوام کی صحت کے مفادات مدنظر رکھتے ہوئے بہترین فیصلہ ہے اس سلسلے میں اعلان کیا گیا کہ جن لوگوں نے ٹکٹ خرید لیے تھے ان کو رقم جلد واپس کردی جائے گی اور ان سے براہ راست رابطہ کر کے آئندہ سال اسی دن کی ٹکٹ دوبارہ خریدنے کا ترجیحی بنیادوں پر موقع فراہم کیا جائے گا۔

جنگ عظیم دوئم کے بعد پہلی مرتبہ ومبلڈن کو منسوخ کیا گیا اور عین ممکن ہے کہ نومبر میں شیڈول ڈیوس کپ کے مقابلوں کی منسوخی کا بھی جلد اعلان کردیا جائے۔ادھر فرنچ اوپن کو مئی سے ستمبر میں منتقل کردیا گیا جس پر متعدد کھلاڑیوں نے برہمی کا اظہار کیا کہ انتظامیہ نے ان سے ایونٹ منتقل کرنے سے قبل رائے نہیں مانگی۔