بابر اعظم کی شاندار کارکردگی، ویرات کوہلی کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

بابر اعظم کی شاندار کارکردگی، ویرات کوہلی کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

لاہور: قومی ٹیم کے نوجوان بلے باز بابر اعظم کو بھارتی سپر سٹار بیٹسمین ویرات کوہلی سے تشبیہ دی جاتی ہے۔ اگر ان کی کارکردگی پر نظر ڈالی جائے تو ایسا کہنا بے جا بھی نہیں. کیونکہ بابر اعظم نے ثابت کیا کہ وہ ناصرف ویرات کوہلی جیسے بیٹسمین بن سکتے ہیں بلکہ اب تک ان سمیت غیر ملکی حریف کھلاڑیوں سے آگے بھی ہیں۔ اعدادوشمار کے مطابق 31 مئی 2015 کو زمبابوے کیخلاف اپنا ون ڈے ڈیبیوکرنے والے بابر اعظم اب تک 23 میچوں میں 53.9 کی اوسط سے 1168 رنز بنا چکے ہیں۔ ان میں بابر اعظم کی 4 سنچریاں اور 6 نصف سنچریاں بھی شامل ہیں اس کے ساتھ ساتھ سابق لیجنڈ ویسٹ انڈین بیٹسمین ویوین رچرڈ کاتیز ترین ہزار رنز کا ریکارڈ برابر کر کے ایشیاء کے پہلے کھلاڑی بن چکے ہیں۔ ان کے مقابلے میں ممتاز بیٹسمین اور بھارتی کپتان ویرات کوہلی نے 23 میچوں میں 50 کی اوسط سے 947 رنز بنائے تھے۔ دیگر بیٹسمینوں میں نیوزی لینڈ کے کین ولیمسن 36 کی اوسط سے 657، آسٹریلوی کپتان سٹیون سمتھ 21 کی اوسط سے 399 جبکہ برطانوی بلے باز جوئے روٹ نے 36 کی اوسط سے 723 رنز بنائے تھے۔


خیال رہے کہ پاکستانی ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے نوجوان بیٹسمین بابر اعظم کی تعریف کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان میں بھارت کے جارحانہ بیٹسمین ویرات کوہلی جیسی صلاحیتیں موجود ہیں۔ ان کا یہ بیان ہملٹن ٹیسٹ میں بابر اعظم کی شاندار بیٹسمین کے بعد سامنے آیا تھا۔ ہملٹن ٹیسٹ میں جہاں پاکستان کا کوئی بیٹسمین کیوی گیند بازوں کا سامنا نہیں کر پایا تھا، وہیں بابر اعظم نے ذمہ دارانہ بلے بازی کرتے ہوئے 90 رنز کی یادگار اننگز کھیلی تھی۔ مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ نوجوانی میں ہی اتنے اچھے کھیل کا مظاہرہ کرنے والے بابر اعظم مستقبل کے بہترین کھلاڑی بن سکتے ہیں۔ اس عمر میں بابر اعظم اتنے ہی اچھے طریقے سے کھیل رہے ہیں، جتنے اچھے ویرات کوہلی تھے۔ قومی ٹیم کی نمائندگی کرنے والے 22 سالہ بابر اعظم نے اب تک 6 ٹیسٹ میچوں میں 27 کی اوسط سے رنز بنائے ہیں۔