جدوجہد آزادی اور دہشت گردی کو آپس میں ملا دیا گیا، مولانا فضل الرحمان

جدوجہد آزادی اور دہشت گردی کو آپس میں ملا دیا گیا، مولانا فضل الرحمان
کشمیریوں اور فلسطین کی جدوجہد کو دہشت گردی کہا جاتا ہے، مولانا فضل الرحمان۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: جے یو آئی (ف) کے زیر اہتمام کل جماعتی کشمیر مشاورت کانفرنس سے خطاب کے دوران مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ طویل عرصہ چیئرمین کشمیر کمیٹی رہا ۔ اس دوران حکومتوں اور اداروں کے رویوں کو بہت قریب سے دیکھا لیکن اس سے زیادہ مایوس کْن دور پہلے نہیں آیا۔


مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ نائن الیون کے بعد آزادی کی تحریکیں متاثر ہوئیں جبکہ جدوجہد آزادی اور دہشت گردی کو آپس میں ملا دیا گیا۔ کشمیریوں اور فلسطین کی جدوجہد کو دہشت گردی کہا جاتا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہماری حکومتیں اور سیاسی جماعتیں بھی اس صورتحال سے متاثر ہیں۔ حکمران اور ریاستی اداروں کی کوتاہی کشمیریوں کے ساتھ وفاداری نبھانے میں ناکامی ہے۔

ان کا  یہ بھی کہنا تھا کہ کشمیریوں کا حق خود ارادیت بین الاقوامی سطح پر تسلیم کیا گیا ہے اور ہم عہد کرتے ہیں کہ جدوجہد کا تسلسل برقرار رکھتے ہوئے کشمیریوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ کشمیریوں کے لئے جدوجہد کا تسلسل جاری رہے گا۔