مردان میں خودکش حملہ آور ہونے کا شبہ، پولیس فائرنگ سے مزدور ہلاک

مردان:  پولیس نے خود کش حملہ آور ہونے کے شبہ میں ایک مزدور پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں وہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا۔ورثا کے مطابق 12 بچوں کا والد، 45 سالہ اولس خان نامی مزدور مردان کا رہائشی تھا اور گذشتہ 15 سال سے شہر میں سائیکل پر کپڑے فروخت کرتا تھا۔ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس (ڈی ایس پی)مردان شاہ ممتاز کے مطابق پولیس نے عدالت کے سامنے سے سائیکل پر گزرتے شخص کو چیک پوسٹ پر رکنے کا اشارہ کیا مگر وہ نہیں رکا لٰہذا اسے مشتبہ خودکش بمبار سمجھتے ہوئے فائرنگ کردی گئی۔

ڈی ایس پی نے مزید بتایا کہ پولیس نے ابتدائی طور پر اپنی گاڑی سائیکل سے ٹکرا کر اسے روکنے کی کوشش کی لیکن جب مذکورہ شخص نے ان کی بات نہ سنی اور بھاگنے کی کوشش کی تو اسے فائرنگ کا نشانہ بنایا گیا۔پولیس کے مطابق زخمی مزدور ہسپتال میں چل بسا، جس کے پاس سے کوئی اسلحہ یا بارودی مواد برآمد نہیں ہوا۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر (ڈی پی او)میاں سعید نے اس حوالے سے بتایا کہ یہ واقعہ جس علاقے میں پیش آیا وہاں کی مکمل ناکہ بندی کی گئی تھی، مذکورہ شخص کو لائوڈ اسپیکرز کے ذریعے رکنے کو کہا گیا مگر وہ نہیں رکا۔میاں سعید کے مطابق مزدور کا حلیہ بھی کافی مشکوک تھا جس کی وجہ سے ابہام پیدا ہوا۔خیال رہے کہ ملک میں جاری حالیہ دہشت گردی کی لہر کے پیش نظر پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے ہائی الرٹ ہیں۔

مصنف کے بارے میں