کرد فورسز نے شام کے طبقہ شہر کے 90 فیصد پر قبضہ کر لیا

کرد فورسز نے شام کے طبقہ شہر کے 90 فیصد پر قبضہ کر لیا

دمشق: کرد فورسز نے شام کے الرقہ صوبے میں طبقہ شہر کے 90 فیصد حصہ کو آئی ایس آئی ایل سے واپس لے لیا ہے۔ اس دوران جھڑپوں میں ایک اندازے کے مطابق 19 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔


یہ دعوی غداب الفرات گروپ کے سرکاری ترجمان نے کہا ہے یہ کرد گروپ راقا ایریا کو واپس لینے کے لیے یو ایس کی مدد سے لڑنے والے شامی ڈیموکریٹک فورسز کا حصہ ہے۔ یاد رہے کہ راقا اسلامک سٹیٹ آف عراق اور لیونٹ گروپ کا ڈی فیکٹو دارالحکومت بھی کہا جاتا ہے۔

غداب الفرات کے جہان شیخ نے بتایا کہ "پرانے شہر کو لینے کے بعد، ہم اب طبقا کے ارد گرد 90 فیصد حصہ کو کنٹرول کرتے ہیں. ... ہم نے آئی ایس آئی ایل کے خلاف پیش قدمی کی اور شہر کے دیگر حصوں کی طرف بھی پیش قدمی کی"۔

طلال سلو، ایس ڈی ایف کے ترجمان نے الجزیرہ کو بتایا کہ فرات ڈیم (بھی طبقا ڈیم کے طور پر جانا جاتا ہے) اور کچھ ارگرد کے علاقے اب بھی آئی ایس آئی ایل کی طرف سے کنٹرول کیے جا رہے ہیں لیکن مزید علاقوں پر قبٖضہ کرنے کے لیے جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔