اصغر خان عملدرآمد کیس،چیف جسٹس نے آئندہ سماعت پر جاوید ہاشمی کو نوٹس جاری نہ کرنے کا حکم دیدیا

اصغر خان عملدرآمد کیس،چیف جسٹس نے آئندہ سماعت پر جاوید ہاشمی کو نوٹس جاری نہ کرنے کا حکم دیدیا
فائل فوٹو

اسلام آباد:اصغر خان عملدرآمد کیس میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی کے ساتھ مکالمہ کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ ہاشمی صاحب آج آپ نے بھری عدالت میں آپ کی ذات سے میری عقیدت کارازکھول دیا،اب میں اصولی طور پر اس کیس کو سننے کے لیے ڈس کوالیفائی ہو گیا ہوں۔


تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس کی سربراہی میں اصغر خان عملدرآمد کیس کی سماعت ہوئی جس دوران چیف جسٹس اور سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی کے درمیان انتہائی دلچسپ مقالمہ ہوا۔

سماعت کے دوران جاوید ہاشمی نے عدالت میں کہا کہ ” کیا آپ کو یاد ہے کہ آپ نے میرے ہاتھ چومے تھے اور آنکھوں سے لگائے تھے“ ، چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ” ہاشمی صاحب آج آپ نے بھری عدالت میں آپ کی ذات سے میری عقیدت کارازکھول دیا،اب میں اصولی طور پر اس کیس کو سننے کے لیے ڈس کوالیفائی ہو گیا ہوں۔چیف جسٹس نے اصغرخان عمل درآمد کیس میں جاوید ہاشمی کو آئندہ نوٹس نہ کرنے کا حکم دیدیا۔

جاوید ہاشمی کا کہناتھا کہ میں بیمار آدمی ہوں لیکن سپریم کورٹ کے لیے میرا احترام ہے،سپریم کورٹ کے لیے میرا احترام مجھے ہرسماعت پر یہاں کھینچ لاتا ہے،میں سپریم کورٹ کے احترام میں لفٹ بھی استعمال نہیں کرتا،جب ہم یہاں پیش ہوتے ہیں تو ساری قوم دیکھتی ہے کہ کچھ کیا ہے تو عدالت جارہے ہیں۔

جاوید ہاشمی کا کہناتھا کہ اسد درانی نے فہرست میں میرانام نہیں دیا،بعد میں مجھے بھی نوٹس کردیاگیا، مجھے نیب نے بری کردیا تھا،میرا سارا مقدمہ کلیئر ہوگیا تھا،جب بھی نوٹس ہوگا میں عدالت میں ضرور پیش ہوں گا۔ چیف جسٹس نے اصغر خان علمدرآمد کیس میں جاوید ہاشمی کو آئندہ نوٹس نہ کرنے کا حکم جاری کر دیاہے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ بشیر میمن صاحب اگر ان لوگوں کےخلاف ثبوت نہیں تو بتادیں۔ جسٹس ثاقب نثار نے ڈی جی ایف آئی اے کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ ان لوگوں کی ساتھ عزت و احترام سے بات کریں۔

ڈی جی ایف آئی اے کا کہناتھا کہ 19 میں سے 17 لوگوں کو نوٹسز جاری کیے ہیں، لوگ راستے بند ہونے کی وجہ نہیں پہنچ سکے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ آپ بتائیں کہ کیا پیشرفت ہوئی ہے؟ ، تفتیش بھی آپ نے کرنی ہے اور چالان بھی آپ نے بنانا ہے۔

ڈی جی آیف آئی اے نے کہا کہ وزارت دفاع سے گفت وشنید چل رہی ہے،وزارت دفاع نے اعلیٰ اختیاراتی کمیٹی بنائی ہے۔چیف جسٹس نے اصغرخان عمل درآمد کیس میں جاوید ہاشمی کو آئندہ نوٹس نہ کرنے کا حکم دیدیا۔