اسحاق ڈار نے فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ چیلنج کر دیا

اسحاق ڈار نے فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ چیلنج کر دیا

اسلام آباد: وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے ستائیس ستمبر کے فیصلے کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ فرد جرم عائد کرنے کے فیصلے پر نظر ثانی کی جائے کیونکہ ستائیس ستمبر کے حکم نامہ میں قانونی تقاضے پورے نہیں کیے گئے۔


یاد رہے 27 ستمبر کو اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے ناجائز اثاثہ جات کیس کی سماعت کی تھی۔ سماعت کے دوران وفاقی وزیر پر فرد جرم عائد کی گئی تھی۔ فاضل جج نے اسحاق ڈار کو الزامات پڑھ کر سنائے تاہم وزیر خزانہ نے صحت جرم سے انکار کرتے ہوئے آمدنی سے زائد اثاثے بنانے کے الزام کو غلط قراردے دیا تھا ۔ اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام بے بنیاد ہے لہذا اپنے اوپر لگنے والے الزامات کا دفاع کروں گا اور بے گناہی کو ثابت کروں گا۔

عدالت کی جانب سے فرد جرم عائد کئے جانے کے بعد اسحاق ڈار کے وکلا نے عدالت میں حاضری سے استثنا کی درخواست کی جس کی نیب نے مخالفت کی جب کہ عدالت نے استغاثہ کے 2 گواہان کو طلب کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 4 اکتوبر تک ملتوی کر دی تھی۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں