شیخ رشید کیخلاف قبضہ کیس کی سماعت کرنے والے ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر کو ہٹا دیا گیا

شیخ رشید کیخلاف قبضہ کیس کی سماعت کرنے والے ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر کو ہٹا دیا گیا

راولپنڈی: عوامی مسلم لیگ کے سربراہ اور سابق وزیر داخلہ شیخ رشید کے لال حویلی سمیت متروکہ وقف املاک کی 7 اراضی یونٹس پر قبضے کے کیس کا فیصلہ محفوظ کرنے والے راولپنڈی کے ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر وقف املاک آصف خان کو ہٹا دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر وقف املاک راولپنڈی آصف خان کو ہیڈ آفس لاہور رپورٹ کرنے کا حکم دیتے ہوئے ایڈمنسٹریٹر وقف املاک راولپنڈی تنویر خان کو ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر کا اضافی چارج دیدیا گیا ہے۔ 

ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر آصف خان کو چند روز میں لال حویلی سمیت 7 اراضی یونٹس کیس کا فیصلہ سنانا تھا تاہم انہیں عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے جبکہ اس حوالے سے آفتاب درانی کا کہنا ہے کہ ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر وقف املاک راولپنڈی آصف خان کے تبادلے سے میرا کوئی تعلق نہیں ہے۔ 

واضح رہے کہ شیخ رشید اور ان کے بھائی شیخ صدیق نے متروکہ وقف املاک بورڈ کے خلاف عدالت سے بھی رجوع کیا تھا، تاہم عدالت نے ان کی درخواست خارج کر دی تھی، متروکہ وقف املاک میں لال حویلی سمیت 7 اراضی یونٹس پر قبضے کے کیس کی متعدد سماعتیں ہوئی ہیں۔

شیخ رشید کے مستند دستاویزات پیش نہ کئے جانے پر زیر قبضہ اراضی پر فیصلہ محفوظ کیا گیا تھا جس پر شیخ رشید اور ان کے بھائی شیخ صدیق نے گزشتہ روز عدالت سے ایک بار پھر رجوع کیا تھا، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج خورشید عالم بھٹی نے متروکہ وقف املاک راولپنڈی کو 4 اکتوبر کو طلب کر رکھا ہے۔

مصنف کے بارے میں