اقوام متحدہ میں مذہب اور تعصب کی بنیاد پر دہشت گردی کیخلاف قرارداد منظور

اقوام متحدہ میں مذہب اور تعصب کی بنیاد پر دہشت گردی کیخلاف قرارداد منظور
پاکستان نے قرارداد کے متن اور خدوخال وضع کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا۔۔۔۔۔فائل فوٹو

نیو یارک: ترکی کی جانب سے اقوام متحدہ میں مذہب اور تعصب کی بنیاد پر دہشت گردی کے خلاف قرارداد منظور کر لی گئی۔


پاکستان کی حمایت سے ترکی نے نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں دو مساجد پر حملوں اور اسلام دشمن رویوں کے تناظر میں پیش کی۔

پاکستان نے قرارداد کے متن اور خدوخال وضع کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا۔

اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی کا کہنا ہے کہ قرارداد اسلام دشمن رویوں پر مبنی بڑھتی انتہا پسندی اور تنگ نظری کی مخالفت کرتی ہے۔ بڑھتے ہوئے اسلام دشمن رویےعالمی امن کے لیے خطرہ ہیں۔

ملیحہ لودھی نے کہا کہ ہمارے خطے میں بھی انتہا پسند گروہ مذہب کی بنیاد پر انتشار اور امن دشمنی کو فروغ دے رہے ہیں۔ مغرب میں پروان چڑھنے والی انتہا پسند نسل پرست سوچ عالمی بھائی چارےکی راہ میں رکاوٹ ہے۔

پاکستانی مندوب کا کہنا تھا کہ ہمیں دیواریں کھڑی کرنے کے بجائے امن پسندی کے پُل تعمیر کرنے چاہیں۔ کسی مذہب، نسل اور رنگ کے لوگوں کو نفرت، انتہا پسندی اور استحصال کا نشانہ نہیں بننے دے سکتے۔

ملیحہ لودھی کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان نے ہمیشہ اقوام، مذاہب اور تہذیبوں کو قریب لانے کی کوششوں کی حمایت کی ہے۔