نینسی پلوسی کا دورہ تائیوان، چین نے امریکی سفیر کو طلب کر لیا

نینسی پلوسی کا دورہ تائیوان، چین نے امریکی سفیر کو طلب کر لیا

بیجنگ: امریکی ایوان نمائندگان کی سپیکر نینسی پلوسی کے تائیوان کی پارلیمینٹ سے خطاب کے بعد چین نے امریکی سفیر نکولس برنز کو طلب کر کے سخت احتجاج ریکارڈ کرایا گیا ہے۔ 

غیرملکی میڈیا کے مطابق چین کے نائب وزیر خارجہ زی فینگ نے نینسی پلوسی کے دورے کو شیطانی قرار دیتے ہوئے خبردار کیا کہ نینسی پلوسی کے دورہ تائیوان کے نتائج سنگین ہوں گے اورچین خاموش نہیں بیٹھے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکی اقدام جارحانہ نوعیت کا ہے جس کے انتہائی سنجیدہ نتائج ہوں گے۔ 

چین کی وزارت خارجہ نے نینسی پیلوسی کے دورہ تائیوان کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے ’ایک چین‘ اصول کی سنگین خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ پلوسی کا دورہ چین کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کی سنگین خلاف ورزی ہے جس کا شدید اثر چین اور امریکہ تعلقات کی سیاسی بنیاد پر پڑے گا۔

علاوہ ازیں شنگھائی تعاون تنظیم کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل لوگوینوف نے ایک بیان میں کہا کہ روس کے خلاف چھیڑی گئی ہائبرڈ جنگ کا دائرہ امریکہ نے چین تک پھیلانا شروع کر دیا ہے۔ شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ممالک جھوٹی معلومات کا تدارک کریں۔ 

دوسری جانب روس نے چین کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ نینسی پلوسی کا دورہ اشتعال انگیزی ہے اور چین کو اپنی خود مختاری کے تحفظ کیلئے کارروائی کا حق حاصل ہے۔ چین تائیوان کو اپنا حصہ سمجھتا ہے جبکہ تائیوان اپنے آپ کو خود مختار ریاست قرار دیتا ہے۔

مصنف کے بارے میں