مقبوضہ کشمیر میں بھارت ریاستی دہشتگردی کو فوری بند کرے، پاکستان

مقبوضہ کشمیر میں بھارت ریاستی دہشتگردی کو فوری بند کرے، پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارت ریاستی دہشتگردی کو فوری بند کرے، پاکستان

اسلام آباد: پاکستان نے بھارت سے مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی کو فوری بند کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چودھری نے کہا او آئی سی وزرائے خارجہ اجلاس میں فلسطین سمیت متعدد ایشوز زیر غور آئے ہیں اور اجلاس میں مقبوضہ کشمیر سمیت بھارتی مظالم اور بربریت کے خلاف قرارداد منظور کی گئی۔ 

ہفتہ وار بریفنگ کے دوران دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا پاکستان بین الافغان مذاکرات کی حمایت جاری رکھے گا جو وسیح البنیاد کثیر الجہتی اور جامع سیاسی حل پر اختتام پذیر ہو گا جبکہ پرامن، مستحکم اور خوشحال افغانستان کی راہ ہموار کرے گا۔ 

ایرانی سائنس دان محسن فخری زادی کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نے کہا پاکستان فریقین پر زیادہ سے زیادہ صبر و تحمل سے کام لینے اور خطے میں کشیدگی میں اضافے سے گریز کرنے پر زور دیتا ہے۔ 

بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموں و کشمیر میں سنگین صورتحال کو بیان کرتے ہوئے زاہد حفیظ چودھری نے کہا عالمی برادری اس سنگین صورتحال کا نوٹس لے اور انسانی حقوق کی بحالی میں اپنا کردار ادا کرے اور اقوام عالم کو کشمیری عوام کے خلاف بھارتی مظالم رکوانے کے لئے تمام حربے استعمال کرنے چاہیے۔ 

ترجمان دفتر خارجہ نے بالخصوس اقوام متحدہ پر زور دیا کہ وہ پاکستان میں دہشت گردی پھیلانے کے حوالے سے بھارت کے خلاف ہمارے ٹھوس ثبوتوں پر واضح لائحہ عمل اختیار کرے۔ 

اس سے قبل ڈی جی آئی ایس پی آر نے غیرم لکی ویب چینل  'گلوبل ویلیج اسپیس' کو دیے گئے اہم انٹرویو میں کہا پاکستان نے بھارتی دہشتگردی کے ناقابل تردید ثبوت پیش کیے اور پاکستانی ڈوزیئر کو عالمی برادری  نے بہت سنجیدگی سے لیا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھا کہ پاکستان نے دنیا کے سامنے بھارت کا مکرہ چہرہ بے نقاب کر دیا۔ ڈوزیئر سامنے آنے کے بعد دنیا اب بھارتی اسپانسرڈ دہشت گردی پر کھل کر بات کر رہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ فارن آفس نے ڈوزیئر کو سلامتی کونسل کے مستقل ارکان کو پیش کیا پھر اقوام متحدہ سیکرٹری جنرل کو بھی ڈوزیئر دیا۔ آئی سی فورم سے بھی اس پر تازہ ترین اعلامیہ سامنے آیا اور اب یہاں رکیں گے نہیں اور عالمی سطح پر اس سنگین معاملے کو مزید آگے لے جائیں گے۔