آرمی چیف سے امریکی سینیٹرز کی ملاقات، پاک فوج کی قربانیوں کا اعتراف

آرمی چیف سے امریکی سینیٹرز کی ملاقات، پاک فوج کی قربانیوں کا اعتراف

راولپنڈی: پاک فوج کے تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے سینیٹر جان مک کین کی قیادت میں امریکی وفد نے ملاقات کی اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کو سراہا۔


امریکی سینیٹ کی آرمڈ کمیٹی کے وفد میں جان مکین، لنڈسے گراہم، شیلڈن وہائٹ ہاوس، الزبتھ وارن اور ڈیوڈ پرڈیو جبکہ امریکی ناظم الامور جوناتھن پراٹ بھی شامل تھے۔ وفد کو افغانستان سمیت خطے کی صورت حال کے حوالے سے آگاہ کیا گیا اور بتایا گیا کہ کن مشکل حالات میں پاکستان نے خطے میں امن واستحکام کی خاطر مثبت کردار ادا کیا۔

اس موقع پر آرمی چیف نے دورہ کرنے، خطے کی صورت حال اور چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مشترکہ کوششوں پر امریکی وفد کا شکریہ ادا کیا۔ جنرل قمر باجوہ نے کہا کہ پاکستان نے اپنی بہترین کوششیں بروئے کار لائی ہیں اور مستقبل میں امن و استحکام کی خاطر اس کو جاری رکھنے کا اعادہ کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے پاکستان اورامریکا کے درمیان سیکیورٹی تعاون کلیدی حیثیت رکھتا ہے۔ اس موقع پر سینیٹر مکین نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کی قربانیوں اور کوششوں کو سراہتے ہوئے خراج تحسین پیش کیا۔ امریکی سینٹرز نے پاک-افغان سیکیورٹی تعاون اور رابطوں پر بھی اتفاق کیا۔

اس سے پہلے مکین کی قیادت میں امریکی سینیٹرز کے وفد نےمشیر خارجہ سرتاج عزیز سےبھی ملاقات کی تھی جہاں انھوں نے افغانستان میں امن کے لیے پاکستان کے کردار کو اہم قرار دیا تھا۔ مکین کا کہنا تھا کہ کشمیر کے حوالےسے امریکا کی پالیسی میں تبدیلی نہیں آئی اور نہ ہی آئے گی۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں