تہران: روس کے صدر ولادیمیر پوتن اور فرانس کے صدر امانوئیل میکرون نے جمعرات کی شب ایک دوسرے سے ٹلیفون پر بات چیت کی اور جامع ایٹمی معاہدے کی بھرپور حمایت جاری رکھنے کا اعادہ کیا۔
تفصیلات کے مطابق دونوں نے سربراہوں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ ایران اور پانچ جمع ایک گروپ کے درمیان ہونے والے جامع ایٹمی معاہدے پر نظرثانی کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔انھوں نے بدھ کے روز اپنے دورہ تہران اور اعلی ایرانی قیادت کے ساتھ مذاکرات میں بھی جامع ایٹمی معاہدے کو باقی رکھنے اور تمام فریقوں کی جانب سے اس پر عملدرآمد کیے جانے کی ضرورت پر زور دیا تھا۔

امریکہ اور اس کے بعض اتحادی ممالک ایران کے دفاعی اور میزائل پروگرام کو بھی جامع ایٹمی معاہدے میں شام کرانے کی کوشش کر رہے ہیں تاہم اسلامی جمہوریہ ایران نے اسے سختی کے ساتھ مسترد کر دیا۔
خیال رہے کہ ایرانی حکام نے واضح کر دیا ہے کہ تہران اپنے دفاعی اور میزائل پروگرام پر کسی سے مذاکرات نہیں کرے گا۔