اسرائیلی خاتون اول کیخلاف کرپشن کے سنگین الزامات، تحقیقات شروع

اسرائیلی خاتون اول کیخلاف کرپشن کے سنگین الزامات، تحقیقات شروع

تل ابیب: اسرائیلی خاتون اول سارہ نیتن یاہو کے خلاف سرکاری خزانے میں سنگین کرپشن کے الزام میں تحقیقات شروع کر دی گئیں۔


بین الااقوامی میڈیاذرائع کے مطابق پولیس نے سرکاری فنڈز کے غیر قانونی استعمال پر سارہ نیتن یاہو سے تل ابیب میں دو گھنٹے تک تفتیش کی۔ سارہ نیتن یاہو پر الزام ہے کہ انہوں نے مقبوضہ بیت المقدس میں واقع اپنے ذاتی گھر پر سرکاری خزانے سے پیسے خرچ کیے۔

پولیس پہلے ہی اس کیس میں سارہ نیتن یاہو پر فرد جرم عائد کرنے کی سفارش کرچکی ہے جبکہ اب سرکاری اٹارنی نے بھی ان پر فرد جرم عائد کرنے کی سفارش کر دی ہے۔

اس سے پہلے گزشتہ برس دسمبر میں بھی کرپشن کے لازامات کے پیش نظرسارہ نیتن یاہو سے پولیس نے 12 گھنٹے تک تفتیش کی تھی اور ان سے وزیراعظم کی رہائش گاہ پر اخراجات سمیت مختلف معاملات پر سوالات کیے تھے۔