قطری حکومت نے پاناما کیس میں پیش کیے جانیوالے قطری خط سے لاتعلقی کا اظہار کر دیا

قطری حکومت نے پاناما کیس میں پیش کیے جانیوالے قطری خط سے لاتعلقی کا اظہار کر دیا

اسلام آباد : پاناما کیس میں حکومتی مشکلات میں اضافہ ہو گیا۔اہم ترین ثبوت مجھے جانیوالے قطری شہزادے کے خط  کے حوالے سے قطری حکومت نے لاتعلقی کا اظہار کر دیا۔جس سے حکومت مزید پریشان ہو گئی۔


 پاکستان میں تعینات قطری سفیرسقر بن مبارک المنصوری نے نجی ٹی وی کو دیے جانے والے انٹرویو میں ان خطوط سے اظہار لا تعلقی کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاناما کیس پاکستان کا اندرونی معاملہ ہے اور قطر کی پالیسی ہے کہ وہ کسی بھی ملک کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی نہیں کرتا۔ ہماری حکومت کا قطری شہزادے کے خطوط سے کوئی تعلق نہیں یہ ایک ذاتی مسئلہ ہو سکتا ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ قطری شہزادے کی جانب سے بھیجے جانے والے خطوط پر ہماری حکومت کا موقف بالکل واضح ہے . یہ خط حکومتی سطح پر جاری نہیں ہوئے اور نہ ہی یہ سفارتخانے یا وزارت خارجہ کے ذریعے آئے ہیں۔ مجھے سفارتی طور پر اس معاملے کے بارے میں کچھ اندازہ نہیں ہے بلکہ میں نے اس بارے میں صرف اخباروں میں پڑھا ہے۔

قطری سفیر کے انٹرویو پر ردعمل دیتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا قطری خط جھوٹ اور جعلسازی پر مبنی ہے۔ سفیر نے قطری حکومت کا خط سے لاتعلقی کا اظہار کردیا جس سے جھوٹ کا ایک اور ثبوت سامنے آگیا۔ قطری سفیر کا بیان خط کے جعلی ہونے کو تقویت دیتا ہے۔

قطری سفیر کا انٹرویو سامنے آنے کے بعد وزیر مملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کبھی نہیں کہا کہ خطوط کا تعلق قطری حکومت سے ہے ، یہ خطوط قطری شہزادے نے ذاتی حیثیت میں لکھے ہیں۔