سمجھ سے باہر ہے سپریم کورٹ نے عمران خان کوصادق اورامین کیسے قرار دیا ،وہ تو اپنی شادی کے معاملے پر بھی جھوٹ بولتے رہے ہیں:ریحام خان

سمجھ سے باہر ہے سپریم کورٹ نے عمران خان کوصادق اورامین کیسے قرار دیا ،وہ تو اپنی شادی کے معاملے پر بھی جھوٹ بولتے رہے ہیں:ریحام خان

لاہور:پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین کی سابقہ اہلیہ ریحام خان نے کہا کہ سمجھ سے باہر ہے سپریم کورٹ نے عمران خان کوصادق اورامین کیسے قرار دیا ہے،وہ تو اپنی شادی کے معاملے پر بھی جھوٹ بولتے رہے ہیں،انہوں نے دعویٰ کیا کہ عمران خان تیسری شادی کرچکے ہیں مگر پتا نہیں کیوں وہ اسے چھپا رہے ہیں۔


تفصیلات کے مطابق بھارتی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے ریحام خان نے خاموشی توڑتے ہوئے عمران خان کو آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ ان کی شادی چیئرمین پی ٹی آئی سے 31 اکتوبر 2014 کو ہوئی اور ٹھیک ایک سال بعد 31 اکتوبر 2015 کو طلاق ہو گئی۔ریحام کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان کے ساتھ شادی 27 محرم الحرام کو ہوئی تھی اور عمران خان نے کہا تھا کہ وہ محرم کے بعد شادی کا اعلان کر دیں گے مگر انہوں نے دو ماہ بعد اعلان کیا۔

ریحام خان نے کہا کہ عمران خان کی جانب سے اپنی شادی چھپانے پر حیرت ہوئی کیونکہ جھوٹ بولنا ان کی عادت نہیں ہے لیکن عمران خان نے شادی کے بعد ایک ٹوئٹ کے ذریعے شادی کی تردید کر کے بھی جھوٹ بولا۔

اپنے انٹرویو میں ریحام خان کا مزید کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نے عمران خان کو جانے کیسے صادق اور امین قرار دے دیا، وہ تو اپنی شادی کے معاملے پر بھی جھوٹ بولتے رہے ہیں۔جبکہ دوسری طرف سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم کے معاملے پر بہت سختی برتی۔

چیئرمین تحریک انصاف کی شادی کے حوالے سے ریحام خان کا کہنا تھا کہ ان کے ذرائع نے عمران خان تیسری شادی کی تصدیق کر دی ہے مگر نہ جانے کیوں عمران خان اس کا اعلان نہیں کر رہے۔

عمران خان کی سابقہ اہلیہ نے کہا کہ کچھ باتیں جب خود سامنے آ رہی ہیں تو اب انہیں اور بعض دوسرے لوگوں کو بھی اپنی خاموشی توڑنی ہو گی۔ریحام خان نے خود پر پاکستان تحریک انصاف کے معاملات میں مداخلت کے الزامات کی تردید بھی کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کسی اصول پرنہیں چلتے اور وہ موقع کی مناسبت سے بیان دیتے ہیں۔