شوگر کے مریض معالج کے مشورہ سے روزہ رکھ سکتے ہیں ، طبی ماہر پروفیسر زمان شیخ

اسلام آباد : سرسید کالج کے پروفیسرآف میڈیسن اور معروف ماہر امراض ذیابطیس پروفیسر زمان شیخ نے کہا ہے کہ شوگر کے مریض روزہ رکھ سکتے ہیں۔  انھوں نے کہا کہ ذیابیطس کے مریض روزہ رکھ سکتے ہیں تاہم ایسے مریضوں کواپنے معالجین سے مشورہ کرکے اپنی ادویات کے اوقات کار میں تبدیلی لازمی کرانا چاہیے۔ پروفیسر زمان شیخ نے کہا کہ شوگر کے مریض جو ڈائیلسس پر ہوں اور شوگر کے مرض میں مبتلا عمرہ رسیدہ اور محنت کش (مزدور) افراد ہائی رسک گروپ میں شامل ہیں۔

انہیں روزے رکھنے کے لئے انتہائی احتیاط کی ضرورت ہوگی اور ان چاروں گروپس کے افراد کوروزے رکھنے کے لئے اپنے اپنے معالجین سے مشورہ بھی کرنا ہوگا۔نارمل شوگر کے مریضوں کو چاہیے کہ وہ افطار اور سحری کے درمیان کم ازکم پانی کے 10گلاس پیئں اور ان کے لئے افطار و سحری میں دہی کا استعمال بھی انتہائی مفید ہوگا، سحری میں ایک پھل کھا سکتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ شوگر کے مریض تلی ہوئی اشیاءکھجلا پھینی سے بھی پرہیزکریں۔

ان کا کہنا تھا کہ روزے رکھنے سے ذہنی وقلبی سکون ملتا ہے، جبکہ ذہنی تناﺅ میں بھی نمایاں کمی واقع ہوتی ہے۔ انھوں نے کہاکہ روزہ صحت کے لیے بہترین ہے، رمضان میں تراویح پڑھنے والوں کوکسی اور ورزش کی ضرورت نہیں ہوتی۔ شوگر کے مریضوں کے لئے ضروری ہے کہا خون میں شوگر کی سطح معلوم کرنے کے لئے 24گھنٹے میں 3 بار شوگر چیک کی جاسکتی ہے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں.