فرانس میں گوگل اور فیس بک نئے ڈیجیٹل ٹیکس کی زد میں

فرانس میں گوگل اور فیس بک نئے ڈیجیٹل ٹیکس کی زد میں
image by facebook

پیرس : فرانسیسی ڈیجیٹل ٹیکس کے مجوزہ قانون کے مطابق تیس ’ٹیک جائنٹس‘ کو تین فیصد اضافی ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔


وزیر خزانہ کی یہ تجویز عوام کی طرف سے ڈیجیٹل کمپنیوں کے خلاف کم ٹیکس ادا کرنے پر شدید غصے کے نتیجے میں سامنے آئی۔

فرانسیسی وزیر خزانہ برونو  لے مائرے نے کہا ہے کہ قریب تیس کمپنیاں  ڈیجیٹل ٹیکس کے مجوزہ قانون سے متاثر ہوں گی۔ 3% اضافی ٹیکس ادا کرنے والی زیادہ تر ڈیجیٹل کمپنیاں امریکی ہیں لیکن چینی، جرمن، برطانوی اور ایک فرانسیسی کمپنی پر بھی یہ ٹیکس لاگو ہوگا۔

علاوہ ازیں ڈیجیٹل  ٹیکس کی زد میں آنے والی تیس کمپنیوں کی فہرست میں سرچ انجن گوگل، امیزون، سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک، ایپل، اوبر، ایئر بی این بی، بُکنگ ڈاٹ کام اور آن لائن اشتہارات کی فرانسیسی کمپنی کریٹیو بھی شامل ہے۔

مقامی اخبار لے پاریژیں  سے گفتگو میں وزیر خزانہ نے مزید بتایا کہ اس مجوزہ ڈیجیٹل ٹیکس میں ان کمپنیوں کا انتخاب کیا گیا ہے جن کی دنیا بھر میں سالانہ آمدن کا حجم 750 ملین یورو جبکہ فرانس میں 25 ملین یورو تک بنتا ہے۔