پی ایس ایل ملتوی، پبلک اکائونٹس کمیٹی کا چیئرمین اور سی ای او پی سی بی سے مستعفی ہونے کا مطالبہ

پی ایس ایل ملتوی، پبلک اکائونٹس کمیٹی کا چیئرمین اور سی ای او پی سی بی سے مستعفی ہونے کا مطالبہ
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

اسلام آباد: قومی اسمبلی کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) کے رکن اقبال محمد علی نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین احسان مانی اور چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) وسیم خان سے فوری طور پر مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق نجی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے باعث پی ایس ایل کے چھٹے ایڈیشن کے ملتوی ہونے سے دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی ہوئی ہے، مناسب بائیو سیکیورٹی اقدامات کے بجائے بورڈ نے اپنی شہرت کیلئے ملک کا نام خراب کیا، دونوں اعلیٰ آفیشلز کو اس کی ذمہ داری قبول کرنی چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ٹیم پر جب نیوزی لینڈ میں بائیو سیکیورٹی کی خلاف ورزی کا الزام لگا تو وہاں کی وزارت صحت نے اسے وطن واپس بھیجنے کی دھمکی دیدی تھی، پی سی بی نے پی ایس ایل کے معاملات میں سندھ کی وزارت صحت کو کتنا شامل کیا؟ کیا لیگ کیلئے اس سے این او سی لیا گیا؟ ؟6 ٹیموں کے ساتھ کتنے ڈاکٹر زتھے؟

اقبال محمد علی نے کہا کہ برسوں تک ویران رہنے والے ملکی کرکٹ میدان سیکیورٹی فورسز کی انتھک محنت سے دوبارہ آباد ہوئے تھے لیکن پی سی بی نے اس ساری محنت پر پانی پھیر دیا ہے، برطانوی شہریت کے حامل وسیم خان اور احسان مانی سے میرا سوال ہے کہ کیا وہ لندن جا کر فوراً گھر سے باہر نکل سکتے ہیں؟ 14 دن تک انہیں قدم بھی باہر نکالنے کی اجازت نہ ہوگی، ایسے میں انہوں نے پاکستان آنے والوں کو کیسے 2،2 دن میں باہر جانے دیا۔