سعودی شہزادے خالد بن طلال کو جبری قید سے رہا کر دیا گیا

سعودی شہزادے خالد بن طلال کو جبری قید سے رہا کر دیا گیا

ریاض: سعودی شہزادے خالد بن طلال ایک سال کے بعد جبری قید سے رہا ہو کر بحفاظت اپنے اہل خانہ کے پاس پہنچ گئے ہیں۔


بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے بھتیجے شہزادہ خالد بن طلال ایک سال قید میں رہنے کے بعد بحفاظت اپنے گھر پہنچ گئے۔ اہل خانہ نے شہزادے کی رہائی کی تصدیق کی ہے تاہم سعودی حکومت کی جانب سے تاحال تصدیق یا تردید سامنے نہیں آئی ہے۔

گزشتہ برس نومبر میں ولی عہد محمد بن سلمان کے مخالف شہزادوں اور حکومتی افسران سمیت 600 سے زائد افراد کو کرپشن الزامات میں حراست میں لیا گیا تھا جس پر شہزادہ خالد بن طلال نے حکومت پر شدید تنقید کی تھی۔

بعد ازاں کرپشن الزام میں زیر حراست ارب پتی شہزادے ولید بن طلال حکومت سے ڈیل طے پانے کے بعد رہا ہو کر آگئے تھے تاہم ان کی گرفتاری پر تنقید کرنے والے بھائی خالد بن طلال کو رہا نہیں کیا گیا تھا۔