ٹرمپ انتظامیہ کا سرکاری راز میڈیا میں لانے والوں کے خلاف کاروائی کا اعلان

ٹرمپ انتظامیہ کا سرکاری راز میڈیا میں لانے والوں کے خلاف کاروائی کا اعلان

واشنگٹن :ٹرمپ انتظامیہ نے سرکاری راز میڈیا میں لانے والوں کے خلاف کاروائی کا اعلان کردیا، امریکی اٹارنی جنرل جیف سیشنزکا کہنا ہے کہ جو صحافی خفیہ سرکاری معلومات میڈیا پر دنیا کے سامنے لاتے ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔


غیر ملکی میڈیا کے مطابق یہ اعلان انہوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور مختلف سربراہانِ مملکت کے مابین ٹیلی فونی گفتگو کا متن اخبارات میں شائع ہونے کے ایک دن بعد کیا ہے کیونکہ ان سرکاری رازوں کے افشا ہونے سے امریکی صدر کی ساکھ کو شدید نقصان پہنچا ہے۔متن کے مطابق ٹرمپ نے آسٹریلوی وزیراعظم میلکم ٹرن بل کے ساتھ سخت لہجے میں بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ پناہ گزینوں کے معاملے میں ٹرمپ انتظامیہ کے مقف کی مخالفت ان کےلیے مسائل کھڑے کردے گی۔

دوسری گفتگو کا متن ٹرمپ اور ان کے میکسیکن ہم منصب اینریک پینانیتو کے بارے میں ہے جس میں ٹرمپ نے بظاہر مذاق کرنے والے انداز میں میکسیکو کے صدر کو تنبیہ کی تھی کہ ہے امریکا اور میکسیکو کی درمیانی سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کے امریکی منصوبے کی مخالفت سے باز رہیں۔اس متن کے بارے میں سیشنز کا کہنا تھا کہ یہ خفیہ سرکاری گفتگو تھی اور وہ صدر ٹرمپ کی جانب سے راز افشا ہونے کے معاملے کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہیں جبکہ مستقبل میں ایسے واقعات کی روک تھام کےلیے انہوں نے صحافیوں اور میڈیا اداروں کے خلاف ممکنہ کارروائیوں کا عندیہ بھی ظاہر کیا۔

پریس کانفرنس میں سیشنز نے بتایا کہ سابق براک اوباما کے دورِ صدارت کے مقابلے میں ٹرمپ انتظامیہ نے میڈیا لیکس کے خلاف تفتیش میں تین گنا اضافہ کردیا ہے تاکہ خفیہ سرکاری معلومات کو ذرائع ابلاغ کے ہاتھوں میں پہنچنے سے بچایا جاسکے۔ذرائع ابلاغ پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے جیف سیشنز نے کہا کہ کسی کو بھی یہ اجازت نہیں ہونی چاہیے کہ وہ ذاتی لڑائی کی خاطر میڈیا میں حساس سرکاری معلومات کا انکشاف کرتا پھرے۔

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ امریکی میڈیا سے بطورِ خاص نالاں ہیں جو آئے دن نہ صرف ٹرمپ اور ان کے خاندان بلکہ ان کی سیاسی جماعت ری پبلکن پارٹی کے خلاف خبریں اور انکشافات شائع کرتا رہتا ہے۔امریکی سیاسی ناقدین کا کہنا ہے کہ قومی سلامتی کے نام پر میڈیا کے خلاف راست اقدامات کرتے ہوئے ٹرمپ اپنے مخالفین کا منہ بند کرانے میں اہم پیش رفت کرسکتے ہیں۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں