آج کا پاکستان 2013 کے پاکستان سے بہتر ہے : احسن اقبال

آج کا پاکستان 2013 کے پاکستان سے بہتر ہے : احسن اقبال

اسلام آباد:وفاقی وزیر منصوبہ بندی، ترقی، اصلاحات اور داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ آج کا پاکستان 2013ء کے پاکستان سے بہتر ہے ٗجب معیشت زوال کا شکار تھی، مقامی صنعتیں تقریباً بند تھیں اور روزانہ 18سے 20گھنٹے لوڈ شیڈنگ ہوتی تھی۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک سے پاکستان توانائی کے جن کو بوتل میں بند کرنے میں کامیاب ہو گیا ہے جبکہ ٹرانسپورٹ انفراسٹرکچر میں بہتری لائی گئی ہے۔ اب یہ مرحلہ پاکستان کے صنعتی تعاون میں شامل ہونے کا ہے۔


کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ تاجر برادری چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت کاروباری مواقع میں سرمایہ کاری کرے۔ صنعتوں کے بنیادی ڈھانچوں میں بہتری لائی جائے اور ویلیو ایڈڈ صنعت پر توجہ دی جائے جس سے عالمی معیشت میں مسابقتی تجارت کے لئے پلیٹ فارم میسر آئے گا۔ 

وفاقی وزیر نے کہا کہ تاجر برادری چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت کاروباری مواقع میں سرمایہ کاری کرے ٗ پاکستان معاشی ترقی کی راہ پر گامزن ہے ٗ 2030ء تک 20 بڑی معیشتوں میں شامل ہو جائے گا ٗ 2018ء میں 2500 سے 3000 میگاواٹ مزید بجلی قومی گرڈ میں شامل کی جائے گی۔پاکستان معاشی ترقی کی راہ پر گامزن ہے اور 2030ء تک یہ 20 بڑی معیشتوں میں شامل ہو جائے گا۔ شرح نمو گزشتہ 10 سال کی بلند ترین شرح 5.3 فیصد ہے، اگر ملک میں یہی صورتحال موجود رہی تو رواں مالی سال کے آخر تک شرح نمو 6 فیصد سے زائد تک پہنچ جائے گی۔