'زرداری نے سندھ کی پگڑی باندھ لی ہے اس کا مطلب ہے دال میں کچھ کالا ہے'

'زرداری نے سندھ کی پگڑی باندھ لی ہے اس کا مطلب ہے دال میں کچھ کالا ہے'
25 دسمبر سے ریلوے کی ترقی کا مہینہ شروع ہو جائے گا، شیخ رشید۔۔۔۔۔۔فوٹو/ فیس بُک آفیشل پیج

کراچی: میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا کہ گرین لائن میں تین مہینے تک کوئی ٹکٹ نہیں ہو گا اور اس میں ایک کوچ اور بڑھا رہے ہیں۔ تمام کوچز اوور ہال کی جائیں گی جبکہ 5 فریٹ ٹرینیں اور چل گئیں تو 10 پسنجر ٹرینیں اور چلائیں گے۔


انہوں نے کہا کہ 2 ہزار ریلوے کراسنگز پر پھاٹک نہیں اور محکمے کے پیسے پاس نہیں ہیں جو آمدنی ہو رہی ہے اسی سے ریلوے چلا رہے ہیں۔ ایک دن میں 9 کروڑ 70 لاکھ روپے کی تاریخی آمدن ہوئی ہے۔ 25 دسمبر سے ریلوے کی ترقی کا مہینہ شروع ہو جائے گا۔

وزیر ریلوے نے گزشتہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ سمجھتے ہں سڑک ملک کی معیشت چلا سکتی ہے لیکن یہ عقل کے اندھے ہیں اٹھارہ بیس ارب ڈالر سڑک پر لگا دیا۔

وزیر ریلوے نے بتایا کہ کراچی سے پشاور 1700 کلومیٹر تک نئی ٹرین چلا رہے ہیں اور تفتان سے کوچ چلانے کی فزیبلٹی تیار ہے۔ فیصلہ وزیراعظم کریں گے اور اس کی رفتار 160 کلومیٹر فی گھنٹہ ہو گی اور 8 گھنٹے میں پنڈی سے کراچی پہنچے گی۔

پنڈی میں تجاوزات سے متعلق سوال پر شیخ رشید نے کہا کہ آپ چاہتے ہیں پنڈی میں بھی کراچی والا حال ہو، روز لال حویلی جا سکتا ہوں تو مجھے راولپنڈی میں تجاوزات پر اعتراض نہیں۔ کوئی ووٹ دیتا ہے دے جسے کھلی سڑک جانا ہے وہ اسلام آباد چلا جائے کیونکہ پنڈی خوش ہے۔

وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ انتخابات تو وزیراعظم کا حق ہے تین سال بعد کرا دے۔ آصف زرداری نے سندھ کی پگڑی باندھ لی ہے اس کا مطلب ہے دال میں کچھ کالا ہے کیونکہ زردری جب جیل جانے والے ہوتے ہیں تو سندھ کی پگڑی باندھ لیتےہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں تمام ضمانتیں میڈیکل رپورٹس پر ہوتی ہیں۔ کبھی ڈاکٹر کی ایسی کوئی رپورٹ سنی ہے جو شہباز شریف کے لیے آئی ہے۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ دو دفعہ کہہ چکا ہوں مارچ سے پہلے جھاڑو پھر جائے گی اور 2018 انشااللہ عمران خان کی کامیابی کا سال ہو گا اور خطرات ٹل جائیں گے۔