ملیکا شروات بالی ووڈ انڈسٹری کا شرمناک چہرہ سامنے لے آئیں

ملیکا شروات بالی ووڈ انڈسٹری کا شرمناک چہرہ سامنے لے آئیں

ہدایت کاروں کی خواہشات پوری نہ کرنے پر فلموں سے محروم رہنا پڑا۔۔۔۔۔۔فوٹو : انسٹاگرام

ممبئی: بالی ووڈ کی بولڈ اداکارہ ملیکا شراوت نے انڈسٹری میں جنسی ہراسانی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ہدایت کاروں کی خواہشات پوری نہ کرنے پر انہیں فلموں سے محروم رہنا پڑا۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق بالی ووڈ کی بے باک اداکارہ ملیکا شراوت نے انڈسٹری میں جنسی حراسانی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ’مجھے بھی کئی بڑے پروجیکٹ سے اس لئے نکال دیا گیا کہ میں نے ہدایتکاروں کی جنسی خواہشات پوری نہیں کی جبکہ مجھے یہ تک سننے کو ملا کہ جب میں پردے پر تمام سین ریکارڈ کرسکتی ہوں تو پردے کے پیچھے کرنے میں کیا اعتراض ہے؟

یہ بھی پڑھیں۔۔سنی لیون کی صارفین کو ملاقات کیلئے انوکھی پیشکش۔

ملیکا شراوت نے کہا کہ اس بات سے پتہ چلتا ہے کہ ہمارے ملک میں عورت سے کس طرح کا برتاو رکھا جاتا ہے جبکہ یہاں مرد ذہنی طور پر اتنے آزاد ہیں کہ وہ کسی بھی اداکارہ کے کردار کا فیصلہ فلم کے رول سے کر لیتے ہیں، مجھ پر بہت سارے الزامات لگائے گئے اگر آپ چھوٹی سکرٹ پہن لیں، سکرین پر کسی کا بوسہ لے لیں تو آپ ایک گھٹیا خاتون کہلاتی ہیں جب کہ مرد اس کیفیت سے مکمل آزاد ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں۔۔کترینہ کیف نے سکرین پر نوجوان اداکاروں کیساتھ رومانس کا بائیکاٹ کر دیا۔


واضح رہے کہ بھارتی فلم انڈسٹری کی معروف کوریوگرافر سروج خان نے بھی جنسی ہراسانی کا ذمہ دار خواتین کو قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ لڑکی پر ہے کہ وہ کیا چاہتی ہے؟ اگر اس کے پاس فن ہے تو وہ کیوں خود کو بیچے گی؟ جبکہ اداکارہ اور آئٹم گرل راکھی ساونت نے بھی کہا تھا کہ فلم انڈسٹری میں ہر موڑ پر جنسی کرپشن ہے۔