وہ غیر ملکی کھلاڑی جنہوں نے پی ایس ایل کے بقیہ میچز کھیلنے کیلئے پاکستان واپس آنے کا اعلان کر دیا

وہ غیر ملکی کھلاڑی جنہوں نے پی ایس ایل کے بقیہ میچز کھیلنے کیلئے پاکستان واپس آنے کا اعلان کر دیا
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر

لاہور: پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چھٹے سیزن کے ملتوی ہونے کے بعد غیر ملکی کھلاڑی اپنے اپنے وطن کو واپس لوٹ رہے ہیں تاہم اس کیساتھ ہی لاہور قلندرز اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی نمائندگی کرنے والے چند غیر ملکی کھلاڑیوں نے لیگ کے بقیہ میچز کھیلنے کیلئے پاکستان واپس آنے کا اعلان بھی کیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق پی ایس ایل کے چھٹے ایڈیشن میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی نمائندگی کرنے والے جنوبی افریقہ کے لیجنڈری فاسٹ باؤلر ڈیل سٹین نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں امید ظاہر کی کہ وہ پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 6 کے بقیہ میچز میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی نمائندگی کرنے کیلئے پاکستان واپس آئیں گے جبکہ انہوں نے مداحوں کی جانب سے حمایت پر شکریہ ادا بھی کیا۔ 

ان کا کہنا تھا کہ اگرچہ پی ایس ایل فی الحال ملتوی ہوگئی ہےلیکن میں نہیں چاہتا کہ مداحوں کی امید ختم ہوجائے ، ہم مومینٹم حاصل کرنے سے صرف ایک جیت دور ہیں جیسے ہم نے ملتان سلطانز کے خلاف مقابلے میں کیا تھا، امید ہے کہ جب پی ایس ایل دوبارہ شروع ہوگا تو ہم دوبارہ جیت کی راہ پر گامزن ہوسکیں گے اور اس سال کا فائنل اپنے نام کرلیں گے، یہ بہترین آئیڈیا ہے، مداح ہمارے ساتھ رہیں،امید ہے کہ جلد ہی آپ سے ملاقات ہوگی، آپ کی مدد کے لئے آپ کا شکریہ۔

اسی طرح آسٹریلین آل راؤنڈر بین کٹنگ بھی پی ایس ایل 6 کے بقیہ میچوں کیلئے پاکستان واپسی کے منتظر ہیں جنہوں نے ٹورنامنٹ ملتوی ہوتے دیکھ کر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ امید ہے کہ ہم اگلے دو مہینوں میں یا اس سال کے آخر میں ایک بار پھر ٹورنامنٹ کھیل سکیں گے، میں یہاں واپس آکر واقعی بہت پرجوش ہوں، اس سیزن میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے 5 میچز ابھی باقی ہیں اور ہم نے مومینٹم بھی حاصل کیا ہے، امید ہے کہ ہم اس سال فائنل کیلئے کوالیفائی کرسکیں گے۔

دوسری طرف پشاور زلمی کے کھلاڑی شریفین ردرفورڈ نے بھی پی ایس ایل ملتوی ہونے اور یوں لیگ ادھوری چھوڑ کر وطن واپس لوٹنے پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان سے اچھی یادیں لے کر واپس جا رہا ہوں لیکن مداحوں کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ پی ایس ایل میں اپنی ٹیم پشاور زلمی کو چیمپئن بنوانے کیلئے واپس آؤں گا۔