چین سے تعلقات کو قرض یا امداد سے نکال کر تجارت پر لے جانا چاہتے ہیں، اسدعمر

 چین سے تعلقات کو قرض یا امداد سے نکال کر تجارت پر لے جانا چاہتے ہیں، اسدعمر
فوٹو فائل

شنگھائی : وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا ہے کہ چین سے مالیاتی پیکج کے اعداد و شمار ابھی مفروضوں پر مبنی ہیں۔


نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا تھا کہ چین سے مالیاتی پیکج کی بات ہوئی ہے جس میں امدادی پیکج پر بات چیت جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ چین سے مالیاتی پیکج کے حوالے سے اعداد وشمار ابھی مفروضوں پر مبنی ہیں۔

وفاقی وزیر خزانہ نے کہا کہ کسی ایک نہیں کئی دوست ممالک سے بات چیت جاری ہے، طویل المدتی شراکت داری و سرمایہ کاری پر بھی بات ہو رہی ہے۔اسد عمر نے کہا کہ چین سے تجارت یک طرفہ ہے، اقتصادی راہداری واقعی اقتصادی راہداری ہونی چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ چین سے تعلقات کو قرض یا امداد سے نکال کر تجارت پر لے جانا چاہتے ہیں اور ہمارا سارا زور صنعت، تجارت اور زراعت کے شعبوں پر ہے۔