انتخابی اصلاحات بل میں ختم نبوت سے متعلق متفقہ ترمیم منظور

انتخابی اصلاحات بل میں ختم نبوت سے متعلق متفقہ ترمیم منظور

اسلام آباد: اسپیکر سردار ایاز صادق کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا۔ وزیر قانون زاہد حامد نے انتخابی اصلاحات میں ترمیم کا بل پیش کیا۔ بل میں اقرار نامہ اور حلف نامہ سے متعلق شقیں متفقہ طور پر منظور کی گئی ہیں۔ قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر قانون زاہد حامد نے کہا کہ یہ بل تین سال کی محنت کا نتیجہ تھا ہم نے تاریخی بل پاس کیا تھا جس میں اب ترمیم کر رہے ہیں اور یہ حکومتی نہیں پارلیمانی کمیٹی کی رپورٹ پر مبنی بل تھا۔

زاہد حامد نے کہا کہ تمام پارلیمانی جماعتوں نے پرانا قانون بحال کرنے پر اتفاق کیا ہے کسی کا اس وقت تصور بھی نہیں تھا اور سوچ بھی نہیں سکتے تھے کہ ایسا نکتہ اٹھ سکتا ہے۔ میں سوچ بھی نہیں سکتا کہ ختم نبوت پر اثر انداز ہونے کا کام کریں اور خوشی ہے کہ تمام سیاسی جماعتوں نے اس مسئلے کو محسوس کیا کہ ہمیں اس نکتے کو چھیڑنا ہی نہیں چاہیے تھا۔

وزیر قانون کا کہنا تھا کہ تمام سیاسی رہنماؤں کی کل میٹنگ بلائی گئی اور ہمارا مؤقف تھا اسے اصل حالت میں بحال کیا جائے اس لیے جو بھی کاغذات نامزدگی میں ڈکلیئریشن تھا اسے اصل حالت میں بحال کر رہے ہیں تاہم اس کی تفصیل میں نہیں جانا چاہتا۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ پارلیمانی کمیٹی کا مشترکہ عمل تھا اس کی رپورٹ ہاؤس میں پیش ہوئی اور پہلے اسے نوٹ نہیں کیا گیا۔ سینیٹ میں اسے نوٹ کیا گیا جہاں اسے بحال نہ کرا سکے لیکن تمام قائدین نے اس میں تعاون کیا جس پر سب کو مبارکباد اور خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔

 

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں