چین کا امریکی زرعی مصنوعات کے بائیکاٹ کا فیصلہ

چین کا امریکی زرعی مصنوعات کے بائیکاٹ کا فیصلہ
چین نے پیر کے روز امریکی ڈالر کے مقابلے میں یوآن کی قدر میں مزید کمی کر دی تھی۔۔۔۔۔۔فوٹو/ بشکریہ امریکی میڈیا

بیجنگ: امریکا کی جانب سے چینی مصنوعات پر مزید 10 فیصد ٹیکس عائد کئے جانے کے جواب میں چین نے امریکی زرعی مصنوعات کے بائیکاٹ کا فیصلہ کر لیا جس کے بعد امریکی اسٹاک رواں ہفتے کے پہلے روز سال کی کم ترین سطح پر بند ہوئی۔


چین نے امریکی زرعی مصنوعات کی خریداری روکنے کا فیصلہ کیا ہے اور ساتھ ہی ان پر مزید ٹیکس عائد کرنے کا بھی عندیہ دیا ہے۔ چین نے پیر کے روز امریکی ڈالر کے مقابلے میں یوآن کی قدر میں مزید کمی کر دی تھی۔

تمام تر صورتحال میں امریکی اسٹاک ڈاؤ جونز میں سال کی کم ترین سطح پر ٹریڈ ہوئی۔ دن کے اختتام پر اسٹاک 700 پوائنٹس کی کمی پر بند ہوئی اور امریکا نے چین کو کرنسی کی قدر میں ہیر پھیر کرنے والا ملک قرار دے دیا۔

اقتصادی ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر چین نے اپنی کرنسی کی قدر میں مزید کمی کی تو اس کا اثر ایشیا اور جنوب مشرقی ایشیا کی منڈیوں تک آئے گا اور ہو سکتا ہے انہیں بھی اپنی کرنسی کی قدر میں کمی کرنا پڑے۔

ماہرین کے مطابق کرنسی کی قدر میں کمی سے دنیا بھر میں مہنگائی میں اضافے جبکہ مزید ٹیکسز اور تجارتی پابندیوں کا خدشہ ہے۔