بھارتی انتہا پسندی کا شکار، تاریخی بابری مسجد کی شہادت کو 24برس بیت گئے

بھارتی انتہا پسندی کا شکار، تاریخی بابری مسجد کی شہادت کو 24برس بیت گئے

بھارت میں ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں تاریخی بابری مسجد کی شہادت کو24 برس بیت گئے لیکن مسلمانوں کو آج بھی انصاف نہ مل پایا۔بھارت کے شہر ایودھیا میں6دسمبر1992کو ہزاروں ہندو انتہا پسندوں نے سولہویں صدی کی عظیم ترین مسجد کو شہید کر دیا تھا۔جس  کے بعد بھارت میں بدترین ہندو مسلم فسادات پھوٹ پڑے ،اور ہزاروں افراد جاں بحق ہو گئے۔بابری مسجد کی شہادت کے خلاف اس وقت کے وزیراعلیٰ کلیان سنگھ اور شیو سینا کے سربراہ بال ٹھاکرے اور ایل کے ایڈوانی سمیت 49 افراد کے خلاف مقدمات بھی درج کیے گئے۔


بابری مسجد مغل بادشاہ ظہیر الدین محمد بابر نے 16 صدی عیسوی میں تعمیر کرائی تھی جو اسلامی اور مغل فن تعمیر کا ایک شاہکار تھی جب کہ ہندو انتہاپسندوں کا دعویٰ تھا کہ ظہیر الدین بابر نے ہندو دیوتا رام کی جائے پیدائش پر بنے رام مندر کو مسمار کر کے بابری مسجد تعمیر کی تاہم ہندو اس حوالے سے مستند تاریخی ثبوت دینے میں ناکام رہے ہیں۔