کھڑے ہوکر پانی پیناصحت کیلئے نقصان دہ ہے: ماہرین

کھڑے ہوکر پانی پیناصحت کیلئے نقصان دہ ہے: ماہرین

 کھڑے ہوکر پانی پینا  صحت کیلئے بھی نقصان دہ ثابت ہوتا ہے اس کے ساتھ ساتھ اخلاقیات کے بھی خلاف سمجھا جاتا ہے اور اس حوالے سے اب ماہرین  کی تحقیق کے مطابق انسانی جسم کا دو تھائی وزن پانی کی وجہ سے ہے اس لیے زیادہ سے زیادہ پانی پینا چاہیے  کیونکہ اس سے جسم میں نمی برقرار رہتی ہے اور فضول مادہ خارج ہوتاہے۔


زیادہ پانی پینے سے جسم میں خون کی روانی بہتر ہوتی اور پانی کا زیادہ سے زیادہ استعمال ہماری دائمی صحت کے لیے بہت مفید ہے اس لیے ماہرین صحت بھی ہمیں روزانہ تقریباً 8 گلاس پانی پینے کا مشورہ دیتے ہیں۔

ہربل ماہرین کا کہنا ہے کہ کھڑے ہو کر پانی پینے سے ہماری نسیں کھنچاؤ کا شکار ہوتی ہیں۔اس کے علاوہ کھڑے ہو کر پانی پینے سے آپ کے پینے کی رفتار تیز ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے جوڑوں کو نقصان پہنچتا ہے۔ جس طریقے سے ہم آہستہ آہستہ کھانا کھاتے ہیں اسی طرح آرام سے پانی بھی بیٹھ کر پینا چاہیئے۔

پانی جلدی میں پینے سے جسم میں آکسیجن کی کمی ہو جاتی ہے جس سے دل اور پھیپھڑوں کے مسائل پیدا ہو جاتے ہیں۔ 

اس لیے ہمیں بیٹھ کر اور سکون کے ساتھ پانی پینا چاہئیے تاکہ ہماری صحت پر کوئی بُرے اثرات نہ پڑیں

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں