بدعنوانی کی وجہ سے ملک کی ترقی و خوشحالی کا سفر رک جاتا ہے: چیئرمین نیب

بدعنوانی کی وجہ سے ملک کی ترقی و خوشحالی کا سفر رک جاتا ہے: چیئرمین نیب

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس(ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ ملک سے بدعنوانی کا خاتمہ پوری قوم کی آواز ہے کیونکہ بدعنوانی نہ صرف تمام برائیوں کی جڑ ہے بلکہ بدعنوانی کی وجہ سے ملک کی ترقی و خوشحالی کا سفر رک جاتا ہے یا پھر اس میں تیزی نہیں رہتی۔


چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال نے نیب ہیڈکوارٹرز میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ نیب ملک سے بدعنوانی کے خاتمہ کو نہ صرف اولین ترجیح قرار دیتا ہے بلکہ اس کیلئے قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں۔ چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب نے شکایات کی جانچ پڑتال کیلئے دو ماہ انکوائری چار ماہ انوسٹی گیشن اور چار میں مکمل کرنے کا جو کہ کل 10 ماہ بنتے ہیں وقت مقرر کیا ہے۔ انہوں نے تمام ڈی جیز سے دو ماہ میں شکایات کی جانچ پڑتال چار ماہ میں انکوائریاں اور چار ماہ میں انوسٹی گیشن مکمل نہ کرنے والے تمام انوسٹی گیشن کی تفصیلات طلب کرنے کے ساتھ ساتھ وضاحت 7 دنوں میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ میں نے اپنے خطاب میں پہلے دن تمام افسران کو واضح ہدایات جاری کیں تھیں کہ اب انکوائریاں اور انوسٹی گیشنز الماریوں اور فائلوں میں بند نہیں پڑی رہیں گی بلکہ قانون اور شواہد کی بنیاد پر تمام مقدمات مقررہ وقت کے اندر منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔ چیئرمین نیب نے تمام ڈی جیز کو ہدایت کی کہ تمام شکایات کی جانچ پڑتال ،انکوائریاں اور انوسٹی گیشنزمقررہ وقت کے اندر کمل کی جائیں اور ہر شخص کی عزت نفس کا قانون کے مطابق خیال رکھا جائے۔