کراچی: کوچ میں دورانِ سفر خاتون کو تھپڑ جڑنے کے واقعے کا ڈراپ سین

کراچی: کوچ میں دورانِ سفر خاتون کو تھپڑ جڑنے کے واقعے کا ڈراپ سین

کراچی: صوبہ سندھ کے شہر کراچی کے علاقے اورنگی ٹاؤن میں کوچ  میں دوران سفر خاتون کو تھپڑ مارنے کے واقعے کی حقیقت سامنے آگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز انٹرنیٹ پر  ایک کوچ میں خاتون کو تھپڑ مارنے کی ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس کے بعد پولیس حرکت میں آئی تھی اور بس کنڈیکٹر کی تلاش شروع کر دی تھی اور کوچ کے ڈرائیور احسان، کنڈیکٹر صدیق اور کوچ کے مالک محمد اسرار کو گرفتار کر لیا تھا۔

کوچ کے مالک  نے پولیس کو اپنے بیان میں کہا کہ اس نے ڈرائیور اور کنڈیکٹر دونوں سے واقعے کے بارے میں الگ الگ معلومات لیں تاہم دونوں نے ہی واقعے سے لاتعلقی کا  اظہار کیا۔

 دوسری طرف کوچ کے  کنڈیکٹر صدیق نے  پولیس کو دئیے گئے بیان میں کہا کہ خاتون کو تھپڑ کوچ کے کسی عملے نے نہیں بلکہ خاتون کیساتھ ہی سوار ہونےوالے شخص نے مارا تھا اور بعد ازاں دونوں  اورنگی ٹاؤن فقیر کالونی کے سٹاپ پر اتر کر چلے گئے تھے ، ہمیں معلوم  نہیں کہ یہ دونوں کون تھے  اور نہ واقعے سے ہمارا کوئی تعلق ہے۔

اب متاثرہ خاتون بھی منظر عام پر آگئی ہیں اور اپنے ویڈیو بیان کے ذریعے معاملے کی اصل حقیقت بتا دی ہے، خاتون کے مطابق تھپڑ مارنے والا شخص اس کا اپنا کزن تھا جو ایک ساتھ کوچ میں سفر کر رہے تھے ، خاتون نے کہا کہ یہ ہمارا آپس کا معاملہ ہے، اس طرح سے ویڈیو بنا کر انٹرنیٹ پر وائرل کرنے سے ہماری عزت نفس کو مجروع کیا گیا، متاثرہ خاتون نے کہا کہ ویڈیو قریبی دکاندار نے بنائی  اور مطالبہ ہے کہ اس کیخلاف کارروائی عمل میں لائی جائے جبکہ گرفتار کوچ کے مالک، ڈرائیور اور کنڈیکٹر کو چھوڑ دیا جائے جن کا اس معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

مصنف کے بارے میں