سرپرست تحریک لبیک پاکستان پیر افضل قادری نے دوبارہ سڑکوں پر آنے کی دھمکی دیدی

سرپرست تحریک لبیک پاکستان پیر افضل قادری نے دوبارہ سڑکوں پر آنے کی دھمکی دیدی
فائل فوٹو

لاہور:توہین رسالت کیس میں سپریم کورٹ کی جانب سے بری ہونے والی مسیحی خاتون آسیہ بی بی کے معاملے پر ملک بھر میں احتجاج اور دھرنے دینے والی جماعت تحریک لبیک پاکستان کے سرپرست افضل قادری نے حکومت ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر آنے کی دھمکی دیدی ہے ۔


تفصیلا ت کے مطابق پیر محمد افضل قادری نے خبردار کیا ہے کہ اگر حکومت نے مظاہرین کے ساتھ ہونے والے معاہدے کی خلاف ورزی کی تو ان کی جماعت دوبارہ سڑکوں پر آجائے گی۔

اپنے ویڈیو پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ وہ تمام لوگ جنہوں نے مذاکرات میں شرکت کی اور معاہدے پر دستخط کیے تھے خبردار رہیں کہ کسی بھی قسم کی خلاف ورزی (تنظیم کے کارکنوں اور رہنماﺅں کے خلاف مقدمات کا اندراج) کو برداشت نہیں کی جائے گی۔

پیر محمد افضل قادری کا کہنا تھا کہ 'ٹی ایل پی کے کارکن اور رہنما شہادتوں کی نیت سے سڑکوں پر دوبارہ آجائیں گے، وہ کسی سے خوف زدہ نہیں،انہوں نے کارکنوں کو دوبارہ سڑکوں پر نکلنے کے لیے تیار رہنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ جلد سچائی سامنے لائی جائے گی۔

بعد ازاں رات دیر گئے ٹی ایل پی کی جانب سے جاری کیے جانے والے پیغام میں دعویٰ کیا گیاکہ وہ کارکنوں کی گرفتاریوں پر پنجاب حکومت سے بات چیت کررہے ہیں۔

خیال رہے کہ وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے گزشتہ دنوں مذہبی جماعتوں کی جانب سے کیے گئے احتجاجی دھرنے کے حوالے سے کہا تھا کہ اس طرح کے مظاہروں اور احتجاجی دھرنوں کا مستقل بنیاد پر حل نکالا جانا چاہیے۔

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے تحریک لبیک پاکستان کے رہنما پیر محمد افضل قادری کا کہنا تھا کہ ان کے پاس مذکورہ معاملے میں وفاقی وزیر کے خلاف عدالت میں قانونی کارروائی کا حق موجود ہے۔انہوں نے خبردار کیا کہ 'حکومت اور ان کی جماعت کے درمیان ہونے والے معاہدے کی خلاف ورزی کو فوری طور پر روکا نہ گیا' تو سخت مزاحمت کی جائے گی۔

واضح رہے کہ 31 اکتوبر کو سپریم کورٹ کی جانب سے آسیہ بی بی کی بریت کا فیصلہ آنے کے بعد سے ملک بھر میں مظاہرے جاری تھے جن کا اختتام 2 نومبر کو حکومت سے معاہدے کی صورت میں ہوا تھا۔