ہم جنس پرستی کو قانونی قرار دینے کے بعد بھارتی اداکار اور اداکارائیں بھی میدان میں آ گئیں

ہم جنس پرستی کو قانونی قرار دینے کے بعد بھارتی اداکار اور اداکارائیں بھی میدان میں آ گئیں

سپریم کورٹ نے ہم جنس پرستی کو قابل سزا جرم قرار دینے والی قانونی شق 377 کو منسوخ کر دیا۔۔۔۔۔فائل فوٹو

نئی دلی: بھارتی سپریم کورٹ نے 2013 میں دیئے گئے اپنے ہی فیصلے کو کالعدم قرار دیتے ہوئے ہم جنس پرستی کو قانونی قرار دے دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق سپریم کورٹ کے 5 رکنی بنیچ نے متفقہ فیصلہ دیتے ہوئے ہم جنس پرستی کو قابل سزا جرم قرار دینے والی قانونی شق 377 کو منسوخ کر دیا جس کے بعد ملک میں اب ہم جنس پرستی جرم نہیں ہو گا۔بھارتی چیف جسٹس دیپک مشرا نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ ہم جنس پرستوں کو عام شہریوں کے حقوق حاصل ہیں، ایک دوسرے کے حقوق کا احترام کرنا اعلیٰ ترین انسانیت ہے۔

بھارتی سپریم کورٹ کے اس فیصلہ کے بعد بھارتی فلم انڈسٹری کے نامور اداکار اور ادکارائیں فیصلے کے حق میں میدان میں آ گئیں ہیں اور اسے شاندار اقدام قرار دیدیا ہے۔

ہم جنس پرستی کو قانونی قرار دینے کے فیصلے پر اداکار عامر خان کا کہنا تھا کہ ” ہم سپریم کورٹ کا آرٹیکل 377 کو منسوخ کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہیں ، یہ ان لوگوں کیلئے تاریخی دن ہے جو کہ برابری کے حقوق پر یقین رکھتے ہیں ،عدلیہ نے اپنی ذمہ داری نبھا دی ہے اور اب ہمیں اپنی نبھانی چاہیے ۔“

سونم کپور نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ” ہم جنس پرست کمیونٹی کیلئے میر ی آنکھوں سے خوشی کے آنسو نکل آئے ہیں ، ایک دن یہاں پر کوئی لیبل نہیں ہو گا بلکہ ہر کوئی اپنے خوابوں کے شہر میں زندگی گزارے گا ۔“

بھارتی اداکارہ پریتی زینٹا کا کہناتھا کہ ” اگر آپ کے پاس دل ہے تو آپ کو جسے چاہیں اسے پیار کرنے کی اجازت ہونی چاہیے ، مجھے یہ سن کر بہت خوشی ہوئی ہے کہ سپریم کورٹ نے آرٹیکل 377 منسوخ کر دیاہے ۔“