فلسطینیوں کی نسل کشی اسرائیل کی سوچی سمجھی سازش ہے، امام مسجد اقصیٰ

فلسطینیوں کی نسل کشی اسرائیل کی سوچی سمجھی سازش ہے، امام مسجد اقصیٰ

القدس :مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں قتل کے واقعات میں اسرائیل کی ریاستی مشینری ملوث ہے، زیر تسلط علاقوں میں ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت فلسطینیوں کی نسل کشی کی جا رہی ہے۔


تفصیلات کے  مطابق اپنے ایک بیان میں الشیخ عکرمہ صبری نے کہا کہ  1948 کے مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں صہیونی ریاست کی سرکاری سرپرستی میں فلسطینیوں کی نسل کشی، ان کی جان ومال اور عزت وناموس پر حملے ہو رہے ہیں۔بیت المقدس کی نمائندہ شخصیات کے ایک وفد سے ملاقات میں فلسطین کی سپریم اسلامک کونسل کے چیئرمین نے کہا کہ اندرون فلسطین میں صہیونی ریاست کی سرکاری سرپرستی میں فلسطینیوں کے خلاف قتل جیسے سنگین جرائم کا ارتکاب جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ دو روز قبل اللد شہر میں ایک فلسطینی نوجوان یوناتھن نویصری کو ایک یہودی ڈرائیور کے ساتھ الجھنے کی پاداش میں چاقو کے وار کرکے بے دردی کے ساتھ قتل کردیا گیا۔ اس طرح کے جتنے جرائم رونما ہو رہے ہیں ان کے پیچھے خود اسرائیل کے سرکاری ادارے اور حکومتی سرپرستی کا فرما ہے۔الشیخ عکرمہ صبری  نے کہا  کہ فلسطینیوں کی نسل کشی صہیونی ریاست کی ریاستی پالیسی بن چکی ہے