وزیراعظم کی جاتی امراء میں نواز شریف سے ملاقات، دورہ کابل کے حوالے سے آگاہ کیا

لاہور: پاکستان مسلم لیگ (ن) کی مرکزی قیادت کا ملک کی مجموعی صورتحال پر غوروخوض اور آئندہ کے لائحہ عمل کے حوالے سے اہم مشاورتی اجلاس لاہور میں منعقد ہوا۔ جس میں مجموعی صورتحال، نیب کے کردار، حلقہ بندیوں، نگران سیٹ ا پ، عام انتخابات اور آئندہ مالی سال کے لئے پیش کئے جانے والے بجٹ سمیت پارٹی امور پر تفصیلی گفتگو کی گئی۔

جاتی امراء رائے ونڈ میں مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نواز شریف کی زیر صدارت اجلاس میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی، وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف، سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق، خواجہ سعد رفیق، احسن اقبال، خواجہ محمد آصف، حمزہ شہباز، سینیٹر پرویز رشید، وزیر قانون رانا ثنا اللہ خان، وزیر اعظم کے مشیر مفتاح اسماعیل، سابق وزیر قانون زاہد حامد اور آصف کرمانی سمیت دیگر نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں ملک کی مجموعی صورتحال پر تمام پہلوﺅں سے جائزہ لیا گیا اور اس دوران نہ صرف تمام رہنماﺅں نے کھل کر اپنے خیالات کا اظہار کیا بلکہ اپنی تجاویز بھی دیں۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیرا عظم شاہد خاقان عباسی کے نگران سیٹ اپ کے قیام کے سلسلہ میں قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سے ہونے والے رابطوں بارے بھی گفتگو ہوئی اور اتفاق کیا گیا کہ ایسی غیر جانبدار شخصیت کا چناﺅ کیا جانا چاہیے جو شفاف انتخابات کرانے کا اہل اور اس کا کسی کی بھی جانب جھکاﺅ نہ ہو۔ اجلاس میں اس یقین کا بھی اظہار کیا گیا کہ جمہوری قوتیں اپنے کردار کو بروئے کار لا کر نگران وزیراعظم کے چناﺅ پر اتفاق کریں گی۔ اجلاس میں نیب کے کردار پر بھی کھل کر گفتگو ہوئی۔ اس موقع پر ٹیکس ایمنسٹی سکیم اور آئندہ بجٹ کے حوالے سے بھی گفتگو ہوئی۔

اس موقع پر نواز شریف کا گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے نا مساعد حالات کے باوجود ملک کو ترقی کی راہ پر گامز ن کیا۔ ہم اپنی کارکردگی پر مطمئن ہیں اور انشا اللہ آئندہ عام انتخابات میں عوام اپنا وزن مسلم لیگ (ن) کے پلڑے میں ڈالیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جھوٹا پراپیگنڈا کرنے والوں کو عوام نے پہلے بھی مسترد کیا ہے اور آئندہ بھی نتائج اس سے مختلف نہیں ہوں گے۔

قبل ازیں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا جاتی امراء رائے ونڈ آمد پر مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نواز شریف نے استقبال کیا اور بعد ازاں دونوں کے درمیان ون ٹو ون ملاقات بھی ہوئی جس میں مختلف امور زیر بحث آئے۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے پارٹی قائد کو اپنے حالیہ دورہ کابل کے حوالے سے بھی آگاہ کیا۔