پنجاب حکومت عدالتی فیصلے کے باوجود بلدیاتی اداروں کو کام نہیں کرنے دے رہی، احسن اقبال

پنجاب حکومت عدالتی فیصلے کے باوجود بلدیاتی اداروں کو کام نہیں کرنے دے رہی، احسن اقبال
کیپشن:   پنجاب حکومت عدالتی فیصلے کے باوجود بلدیاتی اداروں کو کام نہیں کرنے دے رہی، احسن اقبال سورس:   فائل فوٹو

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے جنرل سیکرٹری احسن اقبال نے کہا حکومت پنجاب سپریم کورٹ کے فیصلے پر عمل درآمد سے انکاری ہے اور عدالتی فیصلے کے باوجود بلدیاتی اداروں کو کام نہیں کرنے دیا جا رہا ہے۔

پارلیمنٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے رہنما احسن اقبال کا کہنا تھا کہ پنجاب حکومت وزیراعظم کے کہنے پر جو حکم عدولی کر رہی ہے سپریم کورٹ اس کا نوٹس لے۔ پنجاب حکومت نے منتخب چیئرمینوں کے خلاف مقدمے بنانے کی کارروائی تیز کر دی ہے، عدالت نے لکھا کہ بلدیاتی ادارے اسی حالت میں بحال ہوں گے جس حالت میں پہلے تھے لیکن حکومت پنجاب سپریم کور ٹ کے فیصلے پر عمل درآمد سے انکاری ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ حکومت پنجاب اور وزیر بلدیات توہین عدالت اور توہین آئین کر رہے ہیں جبکہ وزیراعظم اور وزیر اعلیٰ کی ہدایت پر بلدیاتی اداروں کے دفاتر سیل کیے گئے، بلدیاتی اداروں کے فنڈز جو پی ٹی آئی کے ذریعے استعمال کیے گئے وہ ریکور کرائے جائیں۔ 

مسلم لیگ (ن) کے جنرل کا کہنا تھا کہ عدالتی فیصلے کے باوجود بلدیاتی اداروں کو کام نہیں کرنے دیا جا رہا ہے کیونکہ ان کا خیال ہے کہ منتخب چئیرمین ان کی جھوٹے کیسوں سے دباؤ میں آ کر وفاداری تبدیل کر دے گا جو سرکاری ملازم مینڈیٹ سے تجاوز کرے گا اس کو قانونی کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا، وہ سرکاری ملازم پھر نوکری سے الگ ہو کر پی ٹی آئی میں شامل ہو کر سیاست کریں۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں سپریم کورٹ نے پنجاب کے بلدیاتی اداروں کو بحال کرنے کا حکم دیا تھا۔